مجھے صرف ملک کی فکر، آخری سانس تک حقیقی آزادی کیلئے لڑتا رہونگا: عمران خان 

مجھے صرف ملک کی فکر، آخری سانس تک حقیقی آزادی کیلئے لڑتا رہونگا: عمران خان 

  

           لاہور(این این آئی) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ایک بار پھر بات چیت کی پیشکش کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں بات چیت کیلئے کہہ رہا ہوں یہی وقت ہے،ملک کے تمام ادارے اکٹھے بیٹھیں،ملک کی واحد وفاقی جماعت کے ساتھ بیٹھ کر مسئلے کا حل نکالیں، ڈنڈے مار کر مسئلے کا حل نہیں نکلے گا، جو کیا جارہا ہے وہ حل نہیں ہے یہ عمران خان کی کمزور ی نہیں ہے،مجھے اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا، مجھے اپنے ملک کی فکر پڑی ہوئی ہے،اداروں کو اپنی آئینی حدود میں کردار ادا کرنا چاہیے، عدلیہ کے فیصلے نہیں مانے جارہے اس سے ملک تباہی کی طرف چلا گیا ہے،بنانا ریپبلک بن گیا، اپنے لوگوں سے کہتا ہوں صبر کریں،کنپٹی پر پارٹی چھڑانے سے پارٹی ختم نہیں ہوتی، یہ تب ختم ہوتی ہے جب نظریہ ختم ہو جاتا ہے۔ ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ یہ ملک جس اصول پر بنا تھا آج اس کی نفی ہو رہی ہے، انسانی حقوق کی بد ترین خلاف ورزیاں ہو رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں تو چار روز اندر تھا، جب سپریم کورٹ میں گیا تو چیف جسٹس صاحب نے حالات بتائے اور میں وہیں اس کی مذمت کرتا ہوں، کون ہے جو مذمت نہیں کرے گا، ہمارے پاس تصاویر ہیں پولیس خود گاڑیاں جلا رہی ہے، آج اسی طرح کر رہے ہیں جیسے ہٹلر نے مخالفین کے خلاف کیا تھا۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے سپورٹرز، رشتہ داروں کو پکڑ رہے ہیں، ٹوئٹ ہو اس کو پکڑ کر جیلوں میں ڈال رہے ہیں،جبری طلاقاتیں ہو رہی ہیں، اس سے سمجھا جارہا ہے پارٹی ختم ہو رہی ہے عمران خان اکیلا رہ گیا ہے۔جو سارے بیٹھ کر فیصلے کر رہے ہیں میری بات بڑی غور سے سنیں، میں جب کوشش کرتا ہوں ڈائیلاگ ہوں اورمیں جب اس کے لئے سامنے آیا ہوں،کوئی ہمارے ساتھ بات چیت تو کر لے ہم بات چیت کر کے مسئلے حل کر لیں مزید سختی شروع ہو جاتی ہے، عجیب ذہن میں بٹھایا ہوا ہے، سمجھتے ہیں ہم ڈائیلاگ کرنے جارہے ہیں عمران خان کے گھٹنے کانپنا شروع ہو ہے ہیں تھوڑی اور سختی کریں یہ بیٹھ جائے گا، جب تک میری سانس ہے حقیقی آزادی کے لئے پوری جدوجہد کرتا رہوں گا،مجھے اس پاکستان کا خطرہ ہے، مجھے ملک کی فکر پڑ گئی ہے۔ عمران خان نے کہا کہ میں شکریہ اد اکرنا چاہتا ہوں میرا نام ای سی ایل میں ڈال دیا،میں تو باہر جانا ہی نہیں چاہتا۔انہوں نے کہا کہ جب ہم تھے تو زر مبادلہ کے ذخائر 16.2ارب ڈالر تھے آج 4.5ارب ڈالر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج جو فیصلے کر رہے ہیں ان سے ملک تباہی کی طرف جارہا ہے، ان کے پاس کوئی روڈ میپ نہیں ہے ان کو جتنا  ٹائم دے رہے ہیں ملک نیچے جاتا جارہا ہے، ایسے حالات میں معاشرہ کنٹرول سے باہر نکل بھی جاتا ہے۔ عوام ابھی کیوں باہر نہیں آرہے کیونکہ انہوں نے انتخابات کی امید لگائی ہوئی ہے، ان کی سوچ ہے کہ انتخابات ہوں گے تو ہم اپنا غصہ نکالیں گے۔ یہ چاہتے ہیں انتخابات تب ہوگا جب عمران خان کو کرش کر دیا جائے گا،جس طرح کا جبر ہو رہا ہے جس طرح کا ظلم ہو رہا ہے یہ کبھی پاکستان میں نہیں ہوا، یہ چاہتے ہیں جب پی ٹی آئی کرش ہو جائے گی تب انتخابات کرا ئیں گے، ہمیں مشرقی پاکستان کے سانحہ سے سبق سیکھنا چاہیے،تحریک انصاف کو ختم کرتے ہوئے پاکستان کو تباہ نہ کریں،وہ  قدم نہ اٹھایا کہ ملک ادھر چلا جائے کہ کوئی کچھ نہیں کر سکے گا، میں بات چیت کی بات کر رہا ہوں یہی وقت ہے،ملک کے تمام ادارے اکٹھے بیٹھیں،ملک کی واحد وفاقی جماعت ہے اس کے ساتھ بیٹھ کر مسئلے کا حل نکالیں، ڈنڈے مار کر مسئلے کا حل نہیں ہوگا،میں تو انتظار میں ہوں کس دن پکڑنے آئیں گے،اداروں کو اپنی آئینی حدود میں کردار ادا کرنا چاہیے۔ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ میں پارٹی چھوڑنے کے لئے پریس کانفرنس نہیں آیا۔گزشتہ روز ویڈیو لنک پر اپنے خطاب کا آغاز کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ یہ نہ سمجھیں میں پارٹی چھوڑنے کے لئے پریس کرنے آیا ہوں۔علاوہ ازیں چیئرمین پاکستان تحریک انصاف اور سابق وزیراعظم عمران خان نے ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں نام ڈالنے پر حکومت کا شکریہ ادا کیا ہے۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ میری بیرون ملک کوئی جائیداد اور کاروبار نہیں، ملک سے باہر میرا کوئی بینک اکاؤنٹ تک نہیں ہے۔عمران خان نے کہا کہ ان وجوہات کی وجہ سے میرا باہر جانے کا کوئی ارادہ نہیں تھا، ای سی ایل میں نام ڈالنے پر حکومت کا شکریہ ادا کرتا ہوں، اگر کبھی چھٹیوں پر بھی جانا ہوا تو پاکستان کے شمالی علاقوں میں جاؤں گا جو دنیا میں میری سب سے پسندیدہ جگہ ہے۔ عمران خان نے دونوں بیٹوں قاسم خان اور سلیمان خان کے ساتھ یادگار تصویر شئیر کر دی جس میں پہاڑی علاقے میں موجود ہے۔عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ ان دنوں مجھے صرف ایک چیز یاد آتی ہے جو اپنے بیٹوں کے ساتھ ہمارے شمالی پہاڑوں میں پیدل سفر کرنا ہے۔ عمران خان نے مزید کہا کہ اللہ نے پاکستان کو دنیا کی بہترین پہاڑی ٹریکنگ سے نوازا ہے۔ انشاء اللہ ایک دن ہم پاکستان کو دنیا کا سکینگ کیپیٹل بنائیں گے۔علاوہ ازیں پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے پی ڈی ایم حکومت کی ایک سال کی معاشی کارکردگی کو بدترین قرار دے دیا۔پی ٹی آئی کے مرکزی میڈیا سیل کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق عمران خان نے ٹوئٹر پر معاشی کارکردگی پر ایک سال کے اعداد و شمار جاری کئے۔عمران خان نے کہا کہ سازش کے تحت کرپٹ ٹولا ملک پر دوبارہ مسلط کیاگیا جس کے نتیجے میں معیشت زبوں حالی کا شکار ہوگئی۔ عمران خان نے کہا کہ اعدادوشمار بتاتے ہیں کہ پاکستان کے عوام کو اتنا نقصان کوئی دشمن بھی نہیں پہنچا سکتاجتنا گزشتہ ایک سال میں پی ڈی ایم نے پہنچایا ہے، یہ ہماری تاریخ کا بدترین معاشی کارکردگی کا سال ہے۔

عمر ان خان

مزید :

صفحہ اول -