پیافنے صنعتی شعبے کو گیس کی فراہمی معطل رکھنے کا فیصلہ مسترد کردیا

پیافنے صنعتی شعبے کو گیس کی فراہمی معطل رکھنے کا فیصلہ مسترد کردیا

                                اہور(کامرس رپورٹر)پیاف نے صنعتی شعبے کو دسمبر جنوری اور فروری میں گیس کی سپلائی معطل رکھنے کے شیڈول کو صنعت دشمن قرار دیتے ہوئے یکسر مسترد کر دیا ہے اور کہا ہے کہ گیس کمپنی کی افسر شاہی کے خود ساختہ شیڈول سے صنعت زندہ نہیں رہ سکے گی ، گزشتہ روز پیاف کے قائمقام چیئرمین خامس سعید بٹ اور وائس چیئرمین امجد علی جاوا نے کہا ہے کہ تین مہینے گیس کی سپلائی معطل رہنے کی صورت میں لاکھوں صنعتی ورکرز بے روزگار ہو جائیں گے۔ ہزاروں گھروں کے چولہے ٹھنڈے اور کمر توڑ مہنگائی کے زمانے میں فاقہ کشی تک نوبت پہنچ جائے گی -عوام کی محبتوں اور ان کے مینڈیٹ سے اقتدار میں آنے والی حکومت کسی طور گیس کمپنی کے اہلکاروں اور افسروں کو اجازت نہ دے کہ وہ روزگار کے مراکز کو اپنے غلط فیصلوں کی کند چھری سے ذبحہ کر دیں -پیافکے رہنماوں نے کہا ہے کہ صنعت کے بعض شعبوں کو گیس کی فراہمی مکمل طور پر معطل اور بعض صنعتی شعبوں کو فراہمی جاری رکھنے کے امتیاری سلوک سے کاروباری طبقہ کو احساس ملنے لگا ہے کہ ملک کی سیاسی قیادت اور حقیقی ذمہ داران کے پاس ملکی صنعت کے مسائل کو سنجیدگی سے حل کرنے کے لیے وقت نہیں یا پھر ان کے نزدیک کاروباری شعبوں کی کوئی اہمیت نہیں - پیافکے رہنماوں نے کہا ہے کہ حکمرانوں نے ملکی صنعت کو صرف افسرشاہی کے فیصلوں کے رحم وکرم پر چھوڑ رکھا ہے . وہ کسی شعبے کو زندہ رہنے دے یا اپنے غلط فیصلوں کی چھری سے ذبحہ کر دے -پیاف کے رہنماوں نے کہا ہے مختلف مصنو عات تیار کرنے والے تمام شعبے صنعت کے زمرے میں آتے ہیں

 اس لیے ان کے ساتھ گیس یا دیگر سہولتوں کی فراہمی کے لیے یکساں سلوک روا رکھا جانا چاہئے ۔

 - ان میں فرق کرنا اور اپنی پسند کے مطابق کسی شعبے کے ساتھ امتیاز ی سلوک کرنا سراسر زیادتی اور ظلم ہے -اس لیے انہوں نے فرق و امتیاز کے سلوک کو فوری طور پر ختم کرنے پر زور دیا ہے -بصورت دیگر پیاف کے رہنماوں نے کہا ہے کہ محرومی کا شکار ہونے والے صنعتکار احتجاج پر مجبور ہوں گے - پیاف کے چیئرمینوں نے کہا ہے کہ حکومت نے صنعت کے لیے ایل این جی کی فراہمی کے عزم و ارادہ کا اعلان کیا لیکن اسے عمل شکل نہیں دی گئی - انہوں نے کہا کہ صنعت کے ساتھ بے دلی کے طرز عمل سے مایوسی پیدا ہو رہی ہے کیونکہ صنعت کی بندش سے برآمدی آرڈرز کی تعمیل و تکمیل نہیں ہو سکتی - خارجہ گاہک دیگر ملکوں کا رخ کرلیں گے - ملکی برآمدات او زرمبادلہ پر بھاری زد پڑے گی اس لیے پیاف کے چیئرمینوں نے وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف اور وفاقی وزیر صنعت پر زور دیا ہے کہ تین ما ہ کے لیے صنعتوں کو گیس کی سپلائی معطل رکھنے کے فیصلہ پر نظر ثانی کریں -ایل این جی کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے اور تمام صنعتی شعبوں کو یکساں گیس کی فراہمی کا بند و بست کیا جائے ۔

مزید : کامرس