ای ایف ایس کا بی آر اے سی سے 284ملین روپے کا معاہدہ

ای ایف ایس کا بی آر اے سی سے 284ملین روپے کا معاہدہ

لاہور( پ ر) ایجوکیشن فنڈ فار سندھ (EFS) کی جانب سے منعقدہ ایک اجلاس میں EFSکی جانب سے اپنے ایک پروگرام ”Intermediaries“ کے نفاذ کے لیے BRACپاکستان سے284.3 ملین روپے کا معاہدہ کیا گیا۔ یہ پروگرام سندھ کے غیر مراعات یافتہ طبقات کو معیاری تعلیم فراہم کرنے کے لیے پائیدار شراکت داری کی حمایت کرتا ہے۔اس معاہدے کے تحت سندھ کے 700اسکولوں میں تعلیم کے فروغ کا بیڑا اٹھایا گیا ہے جس کے ذریعے کراچی، خیرپور اور قمبر شہداد کوٹ کے اضلاع کے تقریباً 21,000 بچے (60فی صد لڑکیاں اور40فی صد لڑکے ) معیاری تعلیم حاصل کرنے کے موقع سے استفادہ کرسکیں گے۔ یہ معاہدہ ایک سال کے لیے قابلِ عمل ہوگا اور پھر سالانہ بنیادوں پر اس کی تجدید کی جائے گی۔باہمی تعاون پر مبنی اس پروگرام کے تحت سندھ کے دوردراز اور کم مراعات یافتہ علاقوں میں اسکول کھولے جائیں گے تاکہ ان بچوں کو تعلیم دی جاسکے۔

 جنھیں تعلیم حاصل کرنے کے کوئی مواقع میسر نہیں ہیں۔ ایجوکیشن فنڈ فار سندھ (EFS)ایک غیر منافع بخش کمپنی ہے ( جو1984ءکے کمپنیز آرڈیننس کی دفعہ 42کے تحت قائم ہوئی) ۔ یہ ادارہ اپنی کثیر جہتی حکمتِ عملی کے ذریعے پاکستان میں تعلیم کے حالیہ بحران کے خاتمے کے لیے کوشاں ہے۔ غریب خاندانوں کو بنیادی امداد کی فراہمی، اسکولوں کی کارکردگی میں اضافہ اور این جی اوز کے ساتھ اشتراک سے اسکول نہ جانے والے بچوں کی نشان دہی اور ان کے لیے اسکول کی تعلیم فراہم کرنے کے ضمن میں اپنے پروگراموں کو مزید وسعت دینا اس کے اغراض ومقاصد میں شامل ہے۔ فی الوقت EFS کا بنیادی ڈونر برطانوی حکومت کا Department for International Development (DFID)ہے اور EFS اس کا تصدیق شدہ پروجیکٹ ہے۔ تقریب میں EFSکے CEOجناب خواجہ عدیل اسلم نے اپنے ادارے کے مقاصد پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا، ”ہمارا خواب ہے کہ پاکستان کے ہر بچے کو بہتر، معیاری اور کم لاگت تعلیم میسر ہو۔“ انھوں نے پروگرام کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا ، ”EFSاور BRAC پاکستان کا یہ اشتراک پاکستان میں تعلیمی بحران کے خاتمے کے ضمن میں ایک مثالی قدم ہے۔معاہدے کی رو سے EFSاس پروگرام کے نفاذ کے ذریعے آنے والے برسوں میں ان بچوں کی تعداد میںحتی الامکان اضافے کے لیے کوشاں رہے گا جو اس پروگرام کے تحت اسکول کی مفت تعلیم حاصل کریں گے۔ عالمی سطح پر اور پاکستان میں بھی BRACمصیبت زدہ خطوں کے غیر مراعات یافتہ بچوں کو تعلیم مہیا کرنے میں مصروفِ عمل ہے، اس طرح ہم ایک دوسرے کے تعاون سے اس بات کو یقینی بنا کر پاکستان میں تعلیم کا معیار بڑھا سکیں گے کہ ہر بچہ ابتدائی عمر سے ہی اسکول جائے۔“

مزید : کامرس