گیس کے حوالے سے پنجاب سے سوتیلی ماں جیساسلوک ہورہاہے

گیس کے حوالے سے پنجاب سے سوتیلی ماں جیساسلوک ہورہاہے

راولپنڈی ( مانیٹرنگ ڈیسک) راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر ڈاکٹر شمائل داﺅد آرائیں نے کہا ہے کہ گیس بحران کے حوالے سے پنجاب کے تاجرو ں و صنعتکاروں کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جا رہا ہے جو کسی طورپر قابل قبول نہیں۔ سی این جی سیکٹر کو بند کرنے بعد بھی صنعتوں کے لئے گیس کی بندش کا متوقع منصوبہ سمجھ سے بالا تر ہے، گیس پورے ملک کا مسئلہ ہے اور پنجاب کے ساتھ امتیازی سلوک کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا،اس بندش سے حکومت کوہر ماہ 70,000لیٹر پٹرول اضافی درآمد کرنا پڑے گاجس کا بوجھ قومی خزانے کو برداشت کرنا پڑے گا،ایران کے ساتھ گیس معاہدہ کو جلد سے جلد مکمل کیا جائے اور اس حوالے سے بیرونی دباﺅ قبول نہ کیا جائے ،گیس بند ہو گی تو صنعتیں کسطرح چلیں گی اور برآمدات کا حجم کیسے بڑھے گا؟ ۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے چیمبر میں تاجروں و صنعتکاروں کے ایک وفد سے ملاقات کے دوران کیا۔اس موقع پر سینئر نائب صدر ملک شاہد سلیم اور نائب صدر محمد عالم چغتائی بھی موجود تھے۔ڈاکٹر شمائل داﺅد نے کہاکہ صنعتیں بند ہوجانے سے صنعتکار بھاری مارک اپ کا بوجھ کس طرح اتاریں گے اور صنعتوں سے وابستہ لاکھو ں افراد کو تنخوائیں کیسے ادا کی جائےں گی، تاجر و صنعتکار برادری او ران سے منسلک لاکھوں افراد کو فاقوں اور خودکشیوں کی طرف دھکیلا جا رہا ہے۔ حکومت کو چاہےے کہ صوبوں میں گیس کی تقسیم کے حوالے سے یکساں پالیسی وضع کرے۔

، گزشتہ دور میں پنجاب حکومت کے پاس بہانہ تھا کہ وفاق پنجاب کے ساتھ ناروا سلوک رکھ رہا ہے اب تو وفاق اور صوبے میں ایک ہی جماعت کی حکومت ہے اب کیوں پنجاب کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔صدر آر سی سی آئی نے کہاکہ لاہور، سیالکوٹ، فیصل آباد پنجاب کے بڑے صنعتی شہر ہیں راولپنڈی گوجرانوالہ وغیر ہ تیزی سے پھیلتے ہوئے صنعتی شہروں میں شمار ہوتے ہیں،موجودہ حالات میں کاروباری سرگرمیوں کا فروغ ناممکن ہے۔ پنجاب ملکی اقتصادی و معاشی ترقی میں اہم کردار ادا کرر ہا ہے، کراچی کے بعد سب سے بڑا صنعتی شہر لاہو ر ہے اور زرعی اجناس کی ملکی ضروریات کا پیشتر حصہ پنجاب ہی پورا کرتا ہے۔ بجلی اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے اور یوریا سیکٹر کی بندش سے زراعت کو بھی ناقابل تلافی نقصان پہنچے گا۔ انہوںنے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ملک بھر میں گیس کی مساوی تقسیم کو یقینی بنائے اور ڈومیسٹک کے ساتھ ساتھ صنعتی شعبوں کو گیس ترجیحی بنیادوں پر فراہم کرے۔انہوں نے کہا کہ توانائی کے نئے ذخائر ڈھونڈنے کے ساتھ ایران اور ترکمانستان کے ساتھ کیے گئے معاہدوں کو جلد سے جلد مکمل کیا جائے۔

مزید : کامرس