’’آگ اور خون کا کھیل۔۔۔اب نہیں‘‘

’’آگ اور خون کا کھیل۔۔۔اب نہیں‘‘
’’آگ اور خون کا کھیل۔۔۔اب نہیں‘‘

  

محمد عمران اسلم:

وطن عزیز کی جغرافیائی و نظریاتی سرحدوں کو عرصہ دراز سے دہشت گردی کے ناسور کا سامنا ہے جس نے پاکستان کی معاشی و معاشرتی ترقی کی راہ میں ان گنت رکاوٹیں کھڑی کر رکھی ہیں۔ ناصرف اندرون ملک روزمرہ زندگی ، امور سلطنت ، تعمیر و ترقی اور سرمایہ کاری جیسے عوامل بری طرح متاثر ہوئے ہیں وہیں وطن عزیزکے شہریوں کا جان و مال بھی محفوظ نہیں رہا اور بیرون ملک پاکستان کا تشخص بھی پامال ہوا ہے۔ ان تمام حقائق کو پیش نظررکھتے ہوئے ملک میں ایک ایسی فورس کے قیام کی ضرورت عرصہ دراز سے محسوس کی جا رہی تھی جو انتہائی پیشہ ورانہ مہارت اور جذبۂ قربانی و حب الوطنی سے سرشار ہوکر دہشت گردی کے اس عفریت کو قابو کرسکے اور انٹیلی جنس معلومات کے حصول، خصوصی آپریشنز اور انویسٹی گیشن کے ذریعے دہشت گردی کا خاتمہ کر سکے اور اس بات کا کریڈٹ بھی پنجاب کے وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کو جاتا ہے کہ انہوں نے دیگر فلاحی منصوبوں کی طرح ملکی استحکام اور سا لمیت کی اہمیت کے پیش نظرایک ایسی فورس کی تشکیل کا بیڑا اٹھایاجو شہریوں کیلئے جان و مال کی سلامتی کی ضامن ہو۔ اس مقصد کیلئے کاؤنٹرٹیررازم ڈیپارٹمنٹ میں 1180کارپولز بھرتی کرکے اس فورس کو برادرملک ترقی کے انٹیلی جنس، آپریشن اور انویسٹی گیشن کے شعبے نے دہشت گردی کے خاتمے کیلئے خصوصی تربیت فراہم کی اور پھر 31جنوری کو ایلیٹ پولیس ٹریننگ سکول میں کاؤنٹرٹیررازم فورس کے 421کارپولز پر مشتمل پہلے دستے کی شاندار پاسنگ آؤٹ پریڈ منعقد ہوئی جس میں وزیراعظم محمد نواز شریف، آرمی چیف جنرل راحیل شریف سمیت کئی ممالک کے سفیران، وفاقی و صوبائی وزراء ، ارکان پارلیمنٹ، سول و عسکری افسران اور میڈیا کے نمائندے شریک ہوئے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے دہشت گردی کے مکمل خاتمے کیلئے اس نئے ادارے کو ہر طرح کے وسائل فراہم کئے اورقومی ضرورت کے اس منصوبے کو وزیراعظم محمد نوازشریف کی ہدایات کے مطابق ذاتی دلچسپی لے کر پایہ تکمیل تک پہنچایا۔

وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف کے احکامات کی روشنی میں،نیشنل ایکشن پلان کے تحت پنجاب حکومت کی جانب سے دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خلاف فوری اور موثر اقدامات اٹھائے گئے ہیں جبکہ متعلقہ قوانین میں مزید تبدیلی کرکے ان کو زیادہ موثر بنایا گیا ہے،نیشنل ایکشن پلان کے تحت پنجاب حکومت نے موثر اقدامات اٹھاتے ہوئے متعلقہ قوانین کے تحت 48617 مقدمات کا اندراج کیا ہے جبکہ اس ضمن میں 53151 ملزمان کو نفرت انگیز تقاریر،وال چاکنگ،آتشین اسلحے کی نمائش اور دیگر قوانین کے تحت گرفتار کیا گیا ہے۔ نیشنل ایکشن پلان کو موثر ترین بنانے کے لئے وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف باقاعدگی سے اپیکس کمیٹی کی میٹنگز منعقد کرتے ہیں۔جس میں صوبے بھر میں لاء اینڈ آرڈ کی صورتحال پر کڑی نگاہ رکھی جاتی ہے۔ نیشنل ایکشن پلان کے تحت پنجاب حکومت کے اٹھائے گئے اقدامات کی وجہ سے وسیع تر مثبت نتائج نکل رہے ہیں جس کی وجہ سے پنجاب میں لاء اینڈ آرڈر کی صورتحال میں مسلسل بہتری آ ئی ہے۔حال ہی میں ،نیشنل ایکشن پلان کے تحت پنجاب حکومت نے محرم الحرام کے دوران امن وامان قائم رکھنے کے لئے ٹھوس اقدامات کئے جبکہ ہوم ڈیپارٹمنٹ آپریشن ضرب عضب کے شروع ہوتے ہی مسلسل مختلف اداروں کو پیش آمدہ خطرات سے آگاہ کرتا رہا ہے۔پنجاب حکومت نے محرم الحرام کے دوران سختی سے ہدایات جاری کیں کہ تمام جلوسوں اور مجالس میں مقامی انتظامیہ اور پولیس کے ساتھ ساتھ اس علاقے کے منتخب نمائندے بھی حساس جگہوں پر موجود رہیں گے۔اس دوران پنجاب حکومت نے اس امر کوبھی یقینی بنایا کہ تمام قابل اعتراض مواد،تقاریر،شعلہ نوا مقرر،منفی وال چاکنگ،پوسٹرز اور بینرز پر پابندی عائد رہی۔ تمام قوم نیشنل ایکشن پلان کے تحت دہشت گردی،انتہاپسندی اور عدم برداشت کے رویے کے خلاف یک جان ہے جبکہ پنجاب حکومت اس بات کا پوری ادراک رکھتی ہے کہ پاکستان کے استحکام اور ترقی کے لئے انتہائی ضروری ہے کہ نیشنل ایکشن پلان کو موثر انداز میں روبہ عمل لایا جائے۔

وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کے دہشت گردی کے خلاف عزم مسلسل اور سنجیدہ کوششوں کے نتیجے میں محض دو ماہ کے قلیل عرصے میں انسداددہشت گردی فورس کے دوسرے دستے کی ٹریننگ انتہائی تربیت یافتہ ماہرین کے زیرنگرانی مکمل ہوچکی ہے۔پاک افواج دہشت گردوں کے خلاف بہادری سے برسرپیکار ہیں۔آپریشن ضرب عضب میں شاندار کامیابیاں ملی ہیں اور اس آپریشن نے دہشت گردوں کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے۔ پوری قوم پاکستان کا کھویا ہوا امن اسے ہر قیمت پر لوٹانے کا عزم کر چکی ہے۔ ہمیں ملک کو دہشت گردی کی لعنت سے پاک کرکے مایوسیوں کو محنت میں بدل کر قوم کو عظیم بنانا ہے۔ پنجاب حکومت نے وزیراعظم پاکستان محمد نواز شریف کے ویژن کے مطابق پنجاب میں جدید تربیت یافتہ انسداد دہشت گردی فورس تشکیل دی ہے جو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہراول دستے کا کردار ادا کرے گی اور مجھے یقین محکم ہے کہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف جنگ ہر صورت جیتے گا کیونکہ یہ وقت ’’اب یا کبھی نہیں‘‘ کا ہے۔ کامیابی ہمارا مقدر بنے گی، ناکامی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ وزیراعلی محمد شہباز شریف نے ایلیٹ پولیس ٹریننگ سکول ،بیدیاں روڈمیں انسداد دہشت گردی فورس کے دوسرے بیج کی پاسنگ آؤٹ پریڈ کی تقریب میں خصوصی طور پر شرکت کی اور تربیت کے دوران نمایاں کارکردگی دکھانے والے کارپورلرزمیں انعامات تقسیم کئے۔

افواج پاکستان امن کے دشمن دہشت گردوں کو کاری ضرب لگا رہی ہیں،۔ اس جنگ میں پاک افواج، پولیس اور سکیورٹی اداروں کے افسران اور جوان قربانیوں کی نئی تاریخ رقم کر رہے ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف اس جنگ میں پوری قوم یکسو ہے اور اپنی بہادر افواج کے ساتھ کھڑی ہے۔ انشاء اللہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جیت پاکستان کے عوام کی ہوگی۔ سبز ہلالی پرچم بلند ہوگا اور پاکستانی قوم دنیا کی ایک عظیم قوم بنے گی۔ محنت، امانت اور دیانت کے سنہری اصول اپنا کر تاریخ کا دھارا موڑنا ہوگا۔ ہماری اجتماعی کاوشیں رنگ لائیں گی اور پاکستان ایک بار پھر امن و سلامتی کا گہوارہ بنے گا اور دہشت گردی کے خلاف کامیابی کے جھنڈے گاڑ کر قیام پاکستان کے اصل مقاصد کو پورا کریں گے اور دہشت گردوں کا خاتمہ کریں گے۔

مزید :

کالم -