بر سر اقتدار آ کر فیڈریشن کا کھویا ہوا اعتماد بحال کریں گے: میاں انجم نثار

بر سر اقتدار آ کر فیڈریشن کا کھویا ہوا اعتماد بحال کریں گے: میاں انجم نثار

لاہور(کامرس رپورٹر)ہم انشااللہ بزنس کمیونٹی کے بنیادی ایشوز پر کمپرومائز نہیں کریں گے پچھلے دو سال سے بزنس کمیونٹی کے لئے کوئی قابل ذکر کام نہیں ہوا ، ہم بر سر اقتدار آ کر فیڈریشن کا کھویا ہوا اعتماد بحال کریں گے ان خیالات کا اظہاربزنس مین پینل پنجاب ریجن کے چیئرمین اور سیئنر نائب صدارتی امیدوار میاں انجم نثار کی سربراہی میں وفد کا فیصل آباد کی بزنس کمیونٹی بشمول سوپ مینو فیکچررز ایسو سی ایشنز ، ایگریکلچر اینڈ ڈیری ایسوسی ایشن، فیصل آباد چیمبر آف سمال ٹریڈرز اور یارن مرچنٹ ایسوسی ایشنز (سوتر منڈی) کے ووٹروں اور راہنماوں کے ساتھ کامیاب دور ہ کے موقع پر کیا۔ وفد میں لاہور چیمبر کے سابق صدور محمد علی میاں، سہیل لاشاری، طاہر جاوید ملک ‘ ظہیر احمد بھٹہ ‘ سیئر وائس چیئر مین پیاف تنویر احمد صوفی ، جاوید اقبال صدیقی، وائس چیئر مین خواجہ شاہ زیب اکرم ( امیدوار برائے نائب صدر ایسوسی ایٹ کلاس پنجاب) میاں عثمان ذوالفقار( امیدوار برائے نائب صدر چیمبر کلاس) و دیگر موجود تھے ۔وفد کا استقبال کرنے والوں میں ایگریکلچر اینڈ ڈیری ایسوسی ایشن سے میاں زاہد انوار، فیصل آباد کلاتھ ایسوسی ایشن سے نصیر یوسف وہرہ۔ پاکستان ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن سے شیخ اصغر علی، فیصل آباد چیمبر آف سمال ٹریڈرز سے میاں ظفر اقبال، یارن مرچنٹ ایسوسی ایشن کے فارمر چیئرمین اور بانی صدر میاں خشنود، فارمر وائس چیئرمین پائما شیخ جاوید خالدکنڈاوالہ ،سنٹرل چیئرمین پائما شیخ نعیم معراج، ووٹرز شیخ ظفر اقبال، محمد عثمان افضل اور سوتر منڈی فیصل آباد کے تاجروں نے وفد کا پرتپاک استقبال کیا ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے میاں انجم نثار ( سیئنر نائب صدارتی امیدوار برائے فیڈریشن الیکشن )نے کہا کہ فیڈریشن کی موجودہ قیادت نے ذاتی مفاد کو سامنے رکھا ہوا ہے اور بزنس کمیونٹی کے اہم مسائل پر کوئی بات نہیں کی جاتی۔ جب فیڈریشن کی سطح پر ہمارے لیڈران کمزور ہوں گے تو ہمارے مسائل کی وکالت کیسے کی جا سکے گی۔ ہم اپنی ٹیم میں مظبوط اور جرات مندانہ قیادت کو آگے لائے ہیں تاکہ حکومت سے اپنے مسائل حل کروائے جا سکیں۔ پچھلے تین سالوں سے ملکی برآمدات زوال کا شکار ہیں اس کو بڑھانے کے لئے ذرہ برابر کوشیش نہیں کی گئیں۔ ملک میں ایکسپورٹروں اور صنعتکاروں کو گزشتہ کئی سالوں سے سیلز ٹیکس اور انکم ٹیکس کی مد میں ریفنڈ نہیں مل رہا جس سے معیشت جمود کا شکار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فیڈریشن آف پاکستان بزنس کمیونٹی کا سب سے بڑا ادارہ ہے لیکن افسوس کہ کچھ حضرات اس ادارے میں کمزور لوگوں کو آگے لاتے ہیں جو بزنس کمیونٹی کے مسائل بارے لابنگ نہیں کرتے اور نہ متعلقہ ایوانوں تک کمیونٹی کی آواز پہنچاتے ہیں جس سے بزنس کمیونٹی کی مشکلات کم ہونے کی بجائے بڑھتی جا رہی ہیں ۔

GSP

+ کے باوجود ملکی برآمدات 25 سے 20بلین ڈالر تک آ گئی ہیں۔اس سلسلے میں TDAP کا کردار بھی صفر ہے۔ میاں انجم نثار نے کہا کہ پاکستان کی بزنس کمیونٹی ، بالخصوص ایف پی سی سی آئی کے ایگزیکٹیو اور جنرل باڈی ممبران کٹھ پتلی نمائندوں کو منتخب کرنے کی بجائے بزنس کمیونٹی کے مسائل اور مشکلات کیلئے آواز اٹھانے اور عملی اقدامات اٹھانے والے نمائندوں کو منتخب کرنا چاہیے۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...