سندھ اسمبلی کا قبول اسلام کے حوالے سے بل غیر اسلامی ہے،ضیا ء الحق نقشبندی

سندھ اسمبلی کا قبول اسلام کے حوالے سے بل غیر اسلامی ہے،ضیا ء الحق نقشبندی

لاہور(خبر نگار خصوصی)تنظیم اتحادا مت پاکستان کے چیئرمین محمد ضیاء الحق نقشبندی کی اپیل پر تنظیم کے شریعہ بورڈ کے50سے زائد مفتیان کرام نے سند ھ اسمبلی سے منظور کرائے گئے بل کو جس میں کہا گیا ہے کہ ’’ 18سال سے کم عمر کے مرووخواتین کا قبول اسلام معتبر نہیں ہے اور18سال سے زائد عمر کا شخص 21روز تک قبول اسلام کا اعلان نہیں کر سکتا۔جبکہ قبول اسلام کرانے والے یعنی کلمہ پڑھانے والے اورنکاح خواں کے لئے کم ازکم 5سال یا عمر قید کی سزا مقرر کی گئی اور بل کے مطابق کلمہ اور نکاح پڑھانے والے شخص کی مذکورہ مقدمہ میں ضمانت بھی نہیں ہو سکے گی ‘‘اس بل کوقرآن وسنت کی روشنی میں غیر اسلامی ، غیر اخلاقی ،غیر قانونی اوراخلاق باختہ قرار دیتے ہوئے اپناشرعی اعلامیہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ بل جہاں شریعت مطہرہ کی روشنی میں غیر شرعی ہے وہی پر یہ بل آئین پاکستان ،دوقومی نظریہ اور نظریہ پاکستان کے متصادم ہے اسلام کے نام پر بنائی گئی اسلامی مملکت کے اندر اس طرح کے بل کا پاس ہونا لمحہ فکریہ ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے کیونکہ آئین پاکستان میں یہ واضع طور پر لکھا ہوا ہے کہ اسلامی جمہوریہ پاکستان میں کوئی غیر اسلامی قانون نہیں بنایا جا سکتا۔لہٰذا ہمارا مطالبہ ہے کہ اس بل کو فوری طور پر منسوخ کیا جائے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1