کچھ غلط کیا ہوتا تو آئی سی سی ضرور گرفت کرتی:ویرات کوہلی

کچھ غلط کیا ہوتا تو آئی سی سی ضرور گرفت کرتی:ویرات کوہلی

موہالی(آن لائن ) انڈین ٹسٹ کیپٹن ویراٹ کوہلی نے آج اپنے خلاف بال ٹمپرنگ والے الزامات کو ’’رواں سیریز سے توجہ ہٹانے‘‘ کی سازش قرار دیا کیونکہ اس معاملے میں اگر کچھ بھی سچائی ہوتی تو ’’آئی سی سی اْن سے ضرور بات کی ہوتی‘‘۔ پریس کانفرنس کانفرنس میں کوہلی ایسا لگا کہ اپنے جواب کی تیاری کے ساتھ پہنچے۔ جیسے ہی ایک انگریز صحافی نے اْن سے وہ فوٹیج کے تعلق سے دریافت کیا جس میں انھیں گیند پر کچھ نمی لگاتے دکھایا گیا۔ ’’میرے خیال میں دیانت داری سے دیکھیں تو یہ (الزامات) سیریز سے توجہ ہٹانے کیلئے ہے۔ یہ آسٹریلیا میں ہوا ، جب جنوبی افریقہ نے سیریز جیتی۔ مجھے تعجب ہے جس واقعہ کے تعلق سے بات ہورہی ہے وہ راجکوٹ میں پیش آیا لیکن ویزاگ (وشاکھاپٹنم) میں نتیجہ برآمد ہونے تک کچھ ذکر نہ ہوا۔‘‘ کوہلی نے شائستگی سے اپنی بات پیش کردی لیکن اْن کے لہجہ کا طنز کسی سے پوشیدہ نہ رہا، جیسا کہ انھوں نے نشاندہی کی کہ ہارنے کے بعد ناقص رویہ ٹھیک نہیں۔

تاہم برٹش جرنلسٹ مطمئن نہیں ہوئے اور سخت تر سوال کردیا، آپ وہی کررہے ہو جو (فاف) ڈوپلیسی نے کیا؟‘‘ کوہلی نے شائستگی سے جوابی استفسار کیا، ’’میں کیا کررہا تھا؟ اگر میں کچھ (غلط) کررہا تھاتو آئی سی سی نے مجھ سے بات کی ہوتی‘‘۔ اس طرح کوہلی نے معاملہ ختم کردیا۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی