یورپی رہنماؤں کو مہاجرین کا بحران ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی تجویز

یورپی رہنماؤں کو مہاجرین کا بحران ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی تجویز

کوپن ہیگن(این این آئی)ڈنمارک کے ایک قدامت پسند اخبار نے کہا ہے کہ جرمنی سمیت تمام یورپی رہنماؤں کو اپنے عوام میں بڑھتی ہوئی بے اطمینانی پر سنجیدگی سے توجہ دینا ہو گی۔ڈنمارک کے اس اخبار نے جرمن چانسلر میرکل کے اْس اعلان پر بھی اپنی رائے کا اظہار کیاجس میں میرکل نے نہایت پْر عزم اور مستحکم انداز میں یہ کہا کہ وہ 2017ء میں جرمنی کے پارلیمانی انتخابات میں ایک بار پھر چانسلر کے عہدے کے لیے اپنی نامزدگی کو نہایت اہم سمجھتی ہیں۔ مزید یہ کہ اْن کی قدامت پسند سیاسی جماعت کرسچین ڈیموکریٹک پارٹی سی ڈی یو اور اْس کی ہم خیال اور اْس سے قریب ترین سیاسی پارٹی کرسچین سوشل یونین سی ایس یو نے موجودہ علاقائی اور عالمی صورتحال کے تناظر میں متفقہ طور پر یہ فیصلہ کیا ہے کہ یورپ کی اقتصادی شہ رگ سمجھے جانے والے ملک جرمنی کی قیادت پر اِس وقت دْہری ذمہ داری عائد ہے اور اْس کے لیے انگیلا میرکل جیسے مضبوط، ٹھوس اور مخلص قائد کی اشد ضرورت ہے۔اخبار کے مطابق اگر میرکل کی کامیابی یقینی ہو تب بھی دیگر یورپی ممالک کے رہنماؤں کو اپنے عوام میں پائی جانے والے عدم اطمینان کی وجوہات سے نمٹنا ہو گا۔ اور اس ضمن میں سب سے اہم مہاجرین اور تارکین وطن کا بحران ہے۔ یہاں یورپی یونین نے واضح غلطیاں کی ہیں۔ اگر میرکل اور دیگر یورپی رہنماؤں نے کوئی پائیدار اور طویل المیعاد حل تلاش نہ کیا، جو کہ انتہائی دشوار گزار عمل ہوگا، تو میرکل ایک نہایت مشکل صورتحال سے دو چار ہوں گی۔ پھر میرکل کے لیے آئندہ الیکشن میں بطور جرمن چانسلر اقتدار میں رہنے کا کوئی جواز پیش کرنا مشکل ہوگا۔ خاص طور سے اْن ووٹرز کے سامنے جو اپنے ووٹوں کا حقدار میرکل کو ہی سمجھ رہے ہوں گے۔

مزید : عالمی منظر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...