فوجی کمان میں تبدیلی کے باوجود پالیسیوں کا تسلسل برقرار رہے گا،وزیر دفاع

فوجی کمان میں تبدیلی کے باوجود پالیسیوں کا تسلسل برقرار رہے گا،وزیر دفاع

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے نئے آرمی چیف کے تقرر کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ فوجی کمان میں تبدیلی کے باوجود پالیسیوں کا تسلسل برقرار رہے گا،قوم دعا کرے اللہ ہمارے فیصلوں میں برکت ڈالے،ہمیں پہلے کی طرح نئی فوجی قیادت پر بھی مکمل اعتماد ہے ،امید ہے نئی قیادت جنرل راحیل شریف کی اعلیٰ روایات کو آگے بڑھائے گی،آپریشن ضرب عضب کامیابی سے مکمل ہو گا۔نجی ٹی وی سے گفتگو میں خواجہ محمد آصف نے نئے آرمی چیف اور چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کی تعیناتی کی تصدیق کرتے ہوئے قوم سے اپیل کی کہ وہ دعا کرے اللہ ہمارے فیصلوں میں برکت ڈالے ۔جس طرح ملک کے دفاع اور دہشتگردی کے خلاف جنگ میں حاصل ہونے والی کامیابیوں کا سلسلہ جاری رہے اور اس میں مزید بہتری آئے ۔ایک سوال کے جواب میں انھوں نے کہا کہ میرے خیال سے فوجی قیادت میں تبدیلی کے باوجود پالیسیوں کا تسلسل برقرار رہے گا،ابھی ایسی کوئی پالیسی نہیں جس کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہو۔انھوں نے کہا کہ نئی کمان کو جن چیلنجز کا سامنا ہو سکتا ہے وہ کنٹرول لائن اور مشرقی سرحد پر تناؤ اور دہشتگردی کے خلاف جنگ ہے ۔کراچی سمیت بڑے شہروں میں امن و امان کی صورتحال بھی چیلنجز ہیں جن سے ہم نمٹنے کیلئے کوشاں ہیں اور ان پر جلد قابو پا لیا جائے گا۔انھوں نے کہا کہ جنرل راحیل شریف اعلیٰ روایات چھوڑ کر جارہے ہیں مجھے امید ہے ان روایات کو نئی فوجی قیادت آگے بڑھائے گی اور یہ مزید تابندہ اور رخشندہ ہو نگی۔نئی فوجی قیادت آپریشن ضرب عضب کو پایہ تکمیل تک پہنچائے گی۔ابھی بھی دہشتگردی کے اکا دکا واقعات ہو رہے ہیں لیکن 3سال میں حالات میں بہت بہتری آئی ہے جس کے لئے مسلح افواج اور قوم نے قربانیاں دی ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں اس سے پہلے کی فوجی قیادت پر بھی اعتماد تھا اور آنے والی قیادت کو بھی بھر پور اعتماد حاصل ہو گا۔امید ہے نئی قیادت امن کا مشن پایہ تکمیل تک پہنچائے گی۔

مزید : صفحہ اول