تحریک پاکستان کے عظیم رہنما مولانا ظفر علی خاں کی 60ویں برسی آج منائی جا ئیگی

تحریک پاکستان کے عظیم رہنما مولانا ظفر علی خاں کی 60ویں برسی آج منائی جا ئیگی
تحریک پاکستان کے عظیم رہنما مولانا ظفر علی خاں کی 60ویں برسی آج منائی جا ئیگی

  

لاہور (پ ر) تحریک پاکستان کے عظیم رہنما مولانا ظفر علی خاں کی 60ویں برسی آج 27 نومبر 2016ء کو پورے ملک میں تزک و احتشام کے ساتھ منائی جائیگی۔ علی الصبح خصوصی دعائیہ تقریب مولانا ظفر علی خاں ٹرسٹ کے دفتر لاہور میں ہوگی جبکہ مزار مولانا ظفر علی خاں پر دن کا آغاز فاتحہ خوانی سے ہوگا۔ مزار پر پھولوں کی چادر چڑھائی جائے گی اور مولانا ظفر علی خاں کی حیات اور دیگر سرگرمیوں پر مشتمل تاریخی تصاویر کی نمائش اور مولانا کے شہرۂ آفاق منتخب اشعار پر مشتمل مصورانہ خطاطی کی نمائش اور فروخت کا اہتمام ہوگا جبکہ پی ٹی وی سمیت نجی ٹی وی اور ریڈیو چینلز پر بھی مولانا ظفر علی خاں کی عظیم قومی اور ملی خدمات پر خصوصی پروگرام پیش کئے جائیں گے۔دریں اثناء مولانا ظفر علی خاں ڈگری کالج وزیر آباد میں ہفتہ تقریبات میں یوم مولانا ظفر علی خاں کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ پرنسپل کالج پروفیسر ڈاکٹر آصف ہزاروی کے مطابق ٹرسٹ کی کتابوں کی نمائش کیساتھ ساتھ 7 دسمبر کو مولانا ظفر علی خاں پر تیار کی گئی دستاویزی فلم ’’ظفرالملت‘‘ کی نمائش بھی ہوگی اور مولانا ظفر علی خاں پر تقریری مقابلہ بھی ہوگا۔ٹرسٹ کے لاہور دفتر میں بھی پروگرام کے مطابق مورخہ 29 نومبر سے 3 دسمبر 2016ء ہفتہ تقریبات جاری رہے گا۔ مولانا ظفر علی خاں کے منتخب اشعار کی مصورانہ خطاطی پر مشتمل قطعات، حیات اور دیگر قومی سرگرمیوں کا احاطہ کرتی نادر تصاویر کی نمائش ہوگی۔ ٹرسٹ کے دفتر میں مولانا ظفر علی خاں پر شائع کردہ کتابوں کی 50% خصوصی رعایت پر فروخت کا انتظام ہوگا۔ اس دوران مشہور کالم نگار، صحافی اور شعراء کرام مولانا کو خراج عقیدت پیش کرینگے ۔یاد رہے کہ تحریک پاکستان کے دوران مولانا ظفر علی خاں نے صحافتی، دینی، سیاسی، علمی، ادبی، شعر و سخن اور ثقافتی میدان میں خدمات بے مثال اور شاندار خدمات سرانجام دیں۔ وہ ایک شعلہ بیان مقرر اور سچے عاشق رسول تھے۔ مولانا کے اخبار زمیندار نے جدوجہد آزادی میں اہم ترین کردار ادا کیا۔ مولانا ظفر علی خاں کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے ملک بھر کے طول و عرض میں مختلف تنظیموں اور اداروں نے تقریبات منانے کا اہتمام کیا ہے۔

مولانا ظفر علی خاں

مزید : صفحہ آخر