ڈاہرانوالہ‘ زہریلا کھانا کھانے سے مرنیوالوں کی تعداد 4ہوگئی اموات کی وجہ کا تعین نہ ہوسکا

ڈاہرانوالہ‘ زہریلا کھانا کھانے سے مرنیوالوں کی تعداد 4ہوگئی اموات کی وجہ کا ...

ڈاہرانوالہ(نامہ نگار) ڈاہرانوالہ کے نواحی گاؤں 200 مراد میں زہریلا کھانا کھانے سے مرنے والوں کی تعداد 4 ہو گئی ہے۔گزشتہ رات نذیر احمد کی بیٹی اقراء جو کہ نشتر ہسپتال میں زیر (بقیہ نمبر9صفحہ12پر )

علاج تھی وہ بھی زندگی کی بازی ہار گئی۔اموات کی وجہ کا تعین ابھی تک نہ ہو سکا۔روزنامہ پاکستان میں گزشتہ روز لگنے والی خبر پر ضلعی حکومت حرکت میں آ گئی اور تحصیل و ضلعی افسران نے متاثرہ خاندان کے گھر کا دورہ کیا اور واقعہ پر تحقیقات کرنے کے لیے گاؤں کے لوگوں سے معلومات لیتے رہے۔ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر بہاولنگر ڈاکٹر صغیر احمد،اے سی چشتیاں چوہدری ارشد محمود سدھو،ڈپٹی ڈسٹرکٹ آ فیسر ہیلتھ ڈاکٹر حافظ محمد طارق ،تحصیل سینٹری انسپکٹر محمد سلیم نے محکمہ صحت کی ٹیم کے ہمراہ گاؤں 200 مراد کا دورہ کیا اور گزشتہ روز جاں بحق ہونے والی اقراء کی نماز جنازہ میں شرکت کی اور بعد ازاں سرکاری ہسپتال ڈاہرانوالہ کا بھی دورہ کیا اورڈاکٹر مشتاق احمد اور ڈاکٹر خالد حسین سے بھی معلومات کا تبادلہ خیال کیادوسری طرف ڈاہرانوالہ سمیت گرد نواح میں اس واقع پر شدید تشویش پائی جاتی ہے۔نذیر احمد مرحوم کی بیٹی کی نماز جنازہ میں عوام کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔تاہم حلقہ کے منتخب سیاسی نمائندگان میں سے کسی ایک نے بھی متاثرہ خاندان کی داد رسی کے لیے گاؤں کا رخ تک نہیں کیا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...