چنبہ ہاؤس میں حکومتی رکن اسمبلی کے کمرے سے ن لیگ کی خاتون ورکر کی لاش برآمد ہونے پرمقدمہ درج کر لیا گیا

چنبہ ہاؤس میں حکومتی رکن اسمبلی کے کمرے سے ن لیگ کی خاتون ورکر کی لاش برآمد ...
چنبہ ہاؤس میں حکومتی رکن اسمبلی کے کمرے سے ن لیگ کی خاتون ورکر کی لاش برآمد ہونے پرمقدمہ درج کر لیا گیا

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک )چنبہ ہاوس میں حکومتی رکن قومی اسمبلی چودھری اشرف کے کمرے سے مسلم لیگ ن کی کارکن سمعیہ کی لاش برآمد ہونے پر تھانہ ریس کورس میں مقدمہ د رج کر لیا گیا ۔چودھری اشرف کا کہنا ہے کہ سمیعہ میری نواسی نہیں ہے ،سمعیہ کا تعلق میرے حلقے سے ہے جس سے قومی اسمبلی کے باہر ملاقات ہوئی تھی ۔

تفصیل کے مطابق لاہور کے چنبہ ہاؤس میں ایم این اے چودھری اشرف کے کمرے سے 40 سال کی خاتون کی لاش برآمد ہوئی ہے۔ریسکیو ذرائع کے مطابق لاش کمرہ نمبر 26سے ملی ہے جو ایم این اے چودھری محمد اشرف کے نام سے بک تھا۔سمعیہ کے قتل کا مقدمہ تھانہ ریس کورس میں اس کے شوہر کی مدعیت میں درج کیا گیا۔سمعیہ کے شوہر کا کہنا ہے کہ سمعیہ کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کیا گیا ۔انہوں نے بتا یا کہ سمعیہ20نومبر کو ن لیگ کے کارکنوں کے ساتھ شورکوٹ گئی جہاں سے وہ 22نومبر کولاہور چنبہ ہاؤس گئی،سمعیہ سے آخری بار 24نومبر کو ٹیلی فون پر بات ہوئی ۔ان کا کہنا تھا کہ 26نومبر کو پتہ چلا کہ سمعیہ کی چنبہ ہاؤس سے لاش برآمد ہوئی ہے ۔

شیخ رشید کی دسمبر سے پہلے ایک شریف کے جانے کی پیشنگوئی پوری

ادھر نجی نیوز چینل جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے چودھری اشرف نے بتا یا کہ سمعیہ سیاسی ورکر تھی ،وہ میرے حلقے سے تعلق رکھتی تھی جس سے قومی اسمبلی کے باہر ملاقات ہوئی تھی ۔انہوں نے کہا کہ سمعیہ خواتین کی مخصوص نشستوں پر رکن قومی اسمبلی بننے کی خواہش رکھتی تھی ۔ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ چنبہ ہاوس میں میرے نام سے کس نے کمرہ بک کرایا علم نہیں ہے ،چمبہ ہاوس انتظامیہ نے بتا ئے بغیر میرے نام سے کمرہ بک کیا ۔

مزید : جرم و انصاف