مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی حکومت نے آزادی پسند قیادت کے اجلاس پر پابندی لگا دی

مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی حکومت نے آزادی پسند قیادت کے اجلاس پر پابندی لگا دی
مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی حکومت نے آزادی پسند قیادت کے اجلاس پر پابندی لگا دی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

سرینگر(آئی این پی)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز نے آزادی پسند قیادت کے اجلاس پر پابندی لگادی۔ علی شاہ گیلانی اور میرواعظ عمر فارو ق کو ان کے گھروں میں نظر بند کیا گیا جبکہ یاسین ملک کو بزرگ رہنما علی گیلانی سے ملاقات کی اجازت نہیں دی گئی۔

لبریشن فرنٹ چیئرمین محمد یاسین ملک سید علی گیلانی کی رہائش گاہ و دفترحید رپورہ پہنچے تاہم انہیں بزرگ مزاحمتی لیڈر سے ملنے کی اجازت نہیں دی گئی۔حریت(ع) چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کو بھی گھر سے باہر آنے کی اجازت نہیں دی گئی۔ حریت(گ) نے مشترکہ مزاحمتی قیادت کی میٹنگ پر قدغن لگانے کی کاروائی کی مذمت کرتے ہوئے کہا’’ حکومت کے ان بزدلانہ اور غیر قانونی اقدامات سے استبدادی اور مغروریت سے لبریز رویہ کی عکاسی ہوتی ہے جبکہ انکے مقامی حاشیہ برداروں کی اس حرکت سے پہلے سے ہی بگڑی شبیہ اور مسخ ہو رہی ہے‘‘۔

حریت ترجمان نے مزید کہا کہ یہ بددیانتی کے اقدامات انتہائی غیر اخلاقی اور قابل مذمت ہیں۔

مزید : انسانی حقوق