جب کوئی مکھی کھانے کی چیز پر بیٹھتی ہے تو آخر کیا کرتی ہے؟ سائنسدانوں نے ایسا انکشاف کر دیا کہ آپ مکھی کو دیکھتے ہی اپنا کھانا چھپا لیں گے

جب کوئی مکھی کھانے کی چیز پر بیٹھتی ہے تو آخر کیا کرتی ہے؟ سائنسدانوں نے ایسا ...
جب کوئی مکھی کھانے کی چیز پر بیٹھتی ہے تو آخر کیا کرتی ہے؟ سائنسدانوں نے ایسا انکشاف کر دیا کہ آپ مکھی کو دیکھتے ہی اپنا کھانا چھپا لیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ کوئی مکھی جب کھانے کی کسی چیز پر بیٹھتی ہے تو آخر کیا کرتی ہے؟ اسی بات کا پتہ چلانے کیلئے ایک تحقیق کی گئی تو اس میں ایسا انکشاف ہوا کہ آپ کسی مکھی کو دیکھ ہی اپنا کھانا چھپا لیں گے اور اسے قریب تو کیا دور سے بھی گزرنے نہیں دیں گے۔

کیا آپ کو معلوم ہے دنیا بھر میں فحش فلموں کی صنعت کا مرکز یہ بہت چھوٹا سا شہر ہے؟ کونسا شہر ہے اور کہاں واقع ہے؟ جواب ایسا کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا

حال میں ہی کئے گئے ایک سروے میں لوگوں سے پوچھا گیا کہ وہ اپنے کھانے میں کس چیز کو دیکھ کر اسے کھانا چھوڑ دیں گے اور تو 61 فیصد لوگوں نے جواب دیا کہ لال بیگ، لیکن سائنسدانوں نے تحقیق میں انکشاف کیا ہے کہ مکھیاں لال بیگ سے بھی 2 گنا زیادہ جراثیم ساتھ لے کر اڑتی ہیں اور کسی بھی چیز پر بیٹھتے ہی سیکنڈز میں وہ سارے جراثیم منتقل بھی کر دیتی ہیں۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ مکھیاں فضلہ، کوڑا کرکٹ، مردار جانور اور اس طرح کی دیگر اشیاءکھاتی ہیں، ایک اور عام خیال یہ بھی ہے کہ چونکہ مکھیاں چبا نہیں سکتیں اس لئے اپنے کھانے پر اینزائمز پھینکتی ہیں جس سے کھانا گل جاتا ہے اور وہ اپنے چوس لیتی ہیں تاہم سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ مکھیوں کے اینزائمز سے انسانوں کی بیماری کا کوئی تعلق نہیں کیونکہ یہ کام وہ بیکٹیریاز کرتے ہیں جو مکھیاں اپنے ساتھ لاتی ہیں۔

’جب بھی کسی کو بتاﺅں کہ ڈیوٹی ختم ہونے کے بعد یہ کام کرتی ہوں تو وہ شدید حیرت میں مبتلا ہوجاتا ہے‘ ائیرہوسٹس نے اپنی زندگی کے بارے میں ایسا انکشاف کردیا کہ دیکھ کر کسی کو بھی یقین نہ آئے

تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ مکھیاں جب کسی گندی چیز پر بیٹھتی ہیں جو وہاں موجود جراثیم اس کی ٹانگوں اور پورے جسم پر موجود بالوں کیساتھ چپک جاتے ہیں جس کے بعد مکھیوں کا آپ کے کھانے کو صرف چھونا ہی ضروری ہوتا ہے کیونکہ اتنی دیر میں ہی نظر نہ آنے والے بیکٹیریاز کھانے میں منتقل ہو جاتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس