آسٹریلوی کر کٹرفلپ ہیوز کو گزرے2برس مکمل ہوگئے

آسٹریلوی کر کٹرفلپ ہیوز کو گزرے2برس مکمل ہوگئے
آسٹریلوی کر کٹرفلپ ہیوز کو گزرے2برس مکمل ہوگئے

  

سڈنی(آئی این پی)سڈنی کرکٹ گراونڈ میں میچ کے دوران سر پر بال لگنے سے جان کی بازی ہارنے والے آسٹریلوی بلے باز فلپ ہیوز کی دوسری برسی اتوارکو منائی گئی۔تیس نومبر 1988کوآسٹریلیا کے ایک کسان کے گھر پیدا ہونے والے فلپ ہیوز نے 21سال کی عمر میں پیشہ ورانہ کر کٹ کی دنیا میں قدم رکھا اور 2009میں جنوبی افریقہ کے خلاف ہونے والی ٹیسٹ سیریز میں آسٹریلوی ٹیم کی نمائندگی کی۔

اس ہی سال سری لنکا کے خلاف کھیلے گئے ون ڈے میچ میں فلپ ہیوز نے 112رنز بنا کر ون ڈے کیریئر کا آغاز کیا اور ڈیبیو میچ میں سنچری بنانے والے آسٹریلیا کے پہلے بلے باز بن گئے۔بائیں ہاتھ سے بیٹنگ کرنے والے فلپ ہیوز نے 5سال کے مختصر بین الاقوامی کیریئر کے دوران 26ٹیسٹ، 25ون ڈے اور واحد ٹی ٹوینٹی میچ میں آسٹریلیا کی نمائندگی کی۔پچیس نومبر2014 کی صبح سڈنی میں ہونے والے ڈومیسٹک کرکٹ کے میچ میں جنوبی آسٹریلیا کی جانب سے کھیلنے والے فلپ ہیوز میدان میں آئے تو کسی کو اندازہ نہ تھا کہ یہ ان کا آخری میچ ثابت ہوگا۔

مخالف ٹیم نیو ساوتھ ویلز کے فاسٹ بالر سین ایبٹ کی جانب 90میل فی گھنٹہ کی رفتار سے کرایا جانے والا ایک باونسر فلپ ہیوز کی موت کی وجہ ثابت ہوا اور وہ پچ پر ہی بے ہوش ہوکر گر پڑے۔دو روز تک اسپتال میں کوما کی حالت میں رہ کر اپنی زندگی کی جنگ لڑنے والے فلپ ہیوز کی موت کے آگے ایک نہ چلی اور 27نومبر 2014کی صبح وہ کرکٹ کی دنیا کو سوگوار چھوڑ کر موت کی وادی میں چلے گئے۔

مزید : کھیل