”میں آپریشن کی راہ میں رکاوٹ تھا اس لیے عدالت نے ۔۔۔“وزیر داخلہ احسن اقبال نے ایسا بیان دے دیا کہ آپ کی بھی حیرت کی انتہا نہ رہے گی

”میں آپریشن کی راہ میں رکاوٹ تھا اس لیے عدالت نے ۔۔۔“وزیر داخلہ احسن اقبال ...
”میں آپریشن کی راہ میں رکاوٹ تھا اس لیے عدالت نے ۔۔۔“وزیر داخلہ احسن اقبال نے ایسا بیان دے دیا کہ آپ کی بھی حیرت کی انتہا نہ رہے گی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ دھرنے والوں کے خلاف آپریشن سے روکے رکھنے پر عدالت نے مجھے توہین عدالت کا نوٹس دیا ، فیض آباد دھرنے کے مظاہرین کے خلاف آپریشن کرنے اور روکنے کا فیصلہ میرا نہیں بلکہ اسلام آباد انتظامیہ کا تھا۔

نجی نیوز چینل جیو نیوز کے پروگرام ’جرگہ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ عدالت میں جج نے دھرنے والوں کے خلاف کارروائی نہ ہونے پر انتظامیہ سے پوچھا تو انتظامیہ نے جواب دیا کہ ہمیں وزیر داخلہ نے کارروائی سے روکا ہوا ہے جس پر مجھے توہین عدالت کا نوٹس ملا ۔ان کا کہنا تھا کہ فیض آباد آپریشن اسلام آباد ہائی کورٹ کی ہدایت پر کیا گیا، آپریشن کے نگران آئی جی اور چیف کمشنر اسلام آباد تھے، میں نے آپریشن کی نگرانی نہیں کی،میں معاملے کے پرامن حل کے حامی تھا۔انہوں نے کہا کہ ان کا کہنا تھا کہ بل حکومت کا نہیں تمام پارلیمانی جماعتوں کا تھا اور قانون سازی میں حکومت ہی نہیں ساری جماعتیں شریک تھیں، حکومت نے قانون بنایا ہوتا تو ہم سب استعفی دے دیتے۔وزیر داخلہ نے کہا کہ معاملے کے حل کے لیے دیگر علماءسے رابطے میں ہیں لیکن جس شخص کے خلاف ثبوت ہی نہیں ایک گروہ اس کا استعفی مانگ رہا ہے، کل کوئی اور مطالبہ لے کر دھرنا دینے آجائے گا، کچھ سیاسی عزائم رکھنے والے حکومت کو کمزور کرنا چاہتے ہیں لیکن ہمیں ملک میں اختلافات اور نفرتوں کو کم کرنا ہے۔ احسن اقبال نے کہا ہے کہ فیض آباد آپریشن کے روز راولپنڈی میں چودھرری نثار کے گھر پر حملے کے دوران ہلاکت ہوئی، یہ بات طے نہیں کہ یہ ہلاکت کس کی فائرنگ سے ہوئیں لیکن ان پر ہمیں بہت افسوس ہے اور پنجاب حکومت اس کی تحقیقات کررہی ہے۔

مزید خبریں :”یہ وہ ہی شخص ہے جو ۔۔۔“چودھری نثار نے وزیر داخلہ احسن اقبال کے خلاف بڑا بیان دے دیا ،نواز شریف کو آج کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا

مزید : قومی