کوئٹہ ، سکیورٹی فورسز کی گاڑی پر خود کش حملہ ، خاتون سمیت 5افراد شہید ، 27زخمی

کوئٹہ ، سکیورٹی فورسز کی گاڑی پر خود کش حملہ ، خاتون سمیت 5افراد شہید ، 27زخمی

کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک،ن لائن)کوئٹہ میں کمانڈنٹ چلتن رائفل کی گاڑی پر خودکش حملے کے نتیجے میں خاتون اوربچے سمیت5 افراد شہید جبکہ سکیورٹی اہلکاروں، خواتین اوربچوں سمیت 27 افراد زخمی ہو گئے، دھماکے سے سے 3 گاڑیوں،4 موٹرسائیکلوں ،1 رکشے، متعدد دکانوں ، ہوٹلز اور عمارتوں کے شیشے ٹوٹ گئے اور انہیں شدید نقصان پہنچا، ہسپتالوں میں ایمر جنسی نافذ کر کے ڈاکٹرز ، پیرامیڈیکس اور دیگر عملے کو طلب کر لیا گیا ،تحریک طالبان پاکستان نے سریاب روڈ پر حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز دو پہر 12بجے کمانڈنٹ چلتن رائفل کی گاڑی بازار کی طرف جا رہی تھی کہ جیسے ہی ان کی گاڑی سریاب روڈ دکانی بابا چوک کے قریب پہنچی تو نامعلوم خودکش حملہ آور نے ان کے گاڑی کے قریب خود کو اڑا لیا جس کے نتیجے میں بچے سمیت 4 افراد موقع پر شہید جن میں حمزہ، حبیب اللہ، نذیر احمد اور بچہ عالیان جبکہ نر گس نامی خاتون ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسی جبکہ دھماکے میں 27 افراد زخمی ہو ئے۔ لاشوں اور زخمیوں کو فوری طور پر سول سنڈیمن ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں پر ایمر جنسی نافذ کی گئی تھی اور تمام ڈاکٹروں، پیرامیڈیکس اور دیگر عملے کو طلب کر لیا گیا تھا جبکہ لاشیں ضروری کا رروائی کے بعد ورثاء کے حوالے کر دی گئی ۔معمولی زخمیوں کو ابتدائی طبی امداد کے بعد ہسپتال سے فارغ کر دیا گیا جبکہ 13 زخمی اعجاز احمد، طالب حسین، نائب خان، یاسر خان، میر خان، امیر محمد، محمد نسیم، محمد وارث، یعقوب آغا، محمد ضمیر، زکیہ بی بی، بچی مہک بی بی اور بچی الشبہ تا حال ہسپتال میں زیر علاج ہے جن میں سے5 زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے ذرائع کے مطابق دھماکے میں 8 سے10 کلو دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا۔ دھماکے کی اطلاع ملتے ہی پولیس، فرنٹیئر کور اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں، بم ڈسپوزل سکواڈ کا عملہ بھی موقع پر پہنچ گیا جنہوں نے علاقے کو گھیرے میں لے کر امدادی کا رروائیاں شروع کر دی اور جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کئے پولیس کے مطابق جائے وقوعہ سے خودکش حملہ آور کی اعضاء اور دیگر مواد تحویل میں لے کر انہیں ڈی این اے ٹیسٹ کے لئے بھجوایا جائے گا جبکہ دھماکہ کی تحقیقات کیلئے پنجاب فرانزک ٹیم جائے وقوعہ کامعائنہ کر نے کے ساتھ ساتھ وہاں سے حاصل ہونے والے شواہد اور جائے وقوعہ سے مزید شواہد اکٹھے کر کے ان کی روشنی میں رپورٹ مرتب کرے گی۔صوبائی وزیر داخلہ سرفراز بگٹی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ دھماکہ خود کش تھا جس میں ایف سی کمانڈنٹ کی گاڑی کو نشانہ بنایا گیا۔ ڈی آئی جی عبدالرزاق چیمہ نے بتایا کہ گاڑی کمانڈنٹ ایف سی کرنل اشتیاق کو لینے جارہی تھی تاہم کمانڈنٹ ایف سی گاڑی میں موجود نہیں تھے جبکہ حملے میں فورسز کے چار اہلکار بھی زخمی ہوئے۔بعدازاں میڈیا ہاؤسزکو جاری ایک بیان میں تحریک طالبان پاکستان کے مرکزی ترجمان محمد خراسانی نے سریاب روڈ پر حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہاہے کہ تفصیل بعد میں جاری کی جائے گی۔

کوئٹہ دھماکہ

مزید : کراچی صفحہ اول