مہمند ایجنسی ، تعلیم و صحت ایمرجنسی ، 187ملازمین کیخلاف کارروائی کی ہدایت

مہمند ایجنسی ، تعلیم و صحت ایمرجنسی ، 187ملازمین کیخلاف کارروائی کی ہدایت

مہمند ایجنسی (نمائندہ پاکستان) مہمند ایجنسی میں تعلیم وصحت ایمرجنسی کے تحت 187 غافل ملازمین کے خلاف کاروائی کی ہدایت۔ مختلف تحصیلوں میں قائم مراکز صحت اور تعلیمی اداروں پر اے پی اے اپر مہمند کے اچانک چھاپوں میں غیر حاضر پائے گئے تھے۔ ڈیوٹی چور ملازمین کے خلاف سخت کاروائی کر کے مانیٹرنگ ٹیموں کو فعال رکھا جائیگا۔ مقصد تعلیم و صحت میں بہتری لانا ہے تفصیلات ک مطابق مہمند ایجنسی میں پولیٹیکل انتظامیہ کی جانب سے شروع کر دہ تعلیمی ایمرجنسی اور محکمہ صحت فعالیت کے تحت سکولوں اور بی ایچ یوز پر اچانک چھاپوں اور مانیٹرنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ اپر مہمند حمید اللہ خٹک کی سربراہی میں بننے والی پانچ مانیٹرنگ ٹیموں نے تحصیل حلیمزئی، تحصیل صافی کے علاقوں گربز، مسعود، ساگی، چناری، تحصیل بائیزئی کے سرحدی علاقوں سوران درہ، میٹئی، شمشاہ ، کوڈا خیل، بابازئی، اتم کلے اور تحصیل خویزئی میں مامد کور، آٹا بازار اور سم غاخی میں قائم 50 سکولوں اور 18 مراکز صحت کا اچانک دورہ کیا۔ اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ حمید اللہ نے بتایا کہ اچانک چھاپوں کے دوران محکمہ تعلیم کے 137 اور محکمہ صحت کے 50 ملازمین اپنی ڈیوٹیوں سے غیر حاضر پائے گئے۔ پولیٹیکل انتظامیہ کے مانیٹرنگ ٹیموں نے سکولوں اور ہسپتالوں کا ریکارڈ اور حاضری رجسٹر چیک کئے۔ انہوں نے کہا کہ ڈیوٹی سے غافل ان ملازمین کے خلاف قانونی کاروائی کے لئے محکمہ تعلیم، محکمہ صحت اور لائیو سٹاک کے سربراہان کو ہادیت کی گئی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اس کاروائی کا مقصد سکول اور سپتال فعال بنانے ہیں تاکہ دور دراز علاقوں کے لوگوں کو بھی تعلم و صحت کی سہولیات ان گاؤں اور دیہات میں میسر آسکے۔ مقصد کے حصول تک چھاپوں اور مانیٹرنگ نظام کو فعال رکھا جائیگا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر