دھرنے کے شرکا ء پر تشدد فسطائیت کی بدترین مثال ہے، آفاق احمد

دھرنے کے شرکا ء پر تشدد فسطائیت کی بدترین مثال ہے، آفاق احمد

کراچی (اسٹا ف رپورٹر ) مہاجر قومی موومنٹ (پاکستان ) کے چےئرمین آفاق احمد نے کہا کہ ختم نبوت ترمیمی بل جیسے حساس و نازک مسئلے کو اسلامی قوانین کی روشنی میں حل کرنے کے بجائے مزید الجھایا اور طول دیا گیا ہے جس میں حکومتی غلط پالیسیوں ا ور اقدمات کااہم کردار ہے، صر ف ایک شخص کوبچانے کیلئے نہ صر ف تمام امت مسلمہ کی دل آزاری کی گئی ہے بلکہ تمام ملک میں انتشار اورانار کی کی فضاء پیداکی گئی ہے،جسکی وجہ سے ہونے والے جانی اور مالی نقصانات کی ذمہ داری موجودہ حکمرانوں پر عائد ہوتی ہے۔آفا ق احمد نے قوم کے نام پیغام میں کہا کہ دھرنے کا شرکاء اور عوام اپنے احتجاج کو پر امن رکھے کیونکہ یہ ملک ہمارا اور اسکو پہنچنے والا نقصان ہمارا اپنا ہے، جبکہ حکومت کی جانب سے شرکا ء پر شیلنگ اور بہیمانہ تشدد فسطائیت کی بد ترین مثال ہے جسے طاقت سے حل کرنے کے بجائے مذاکرات کی میز پر حل کیا جائے۔آفاق احمد نے کہا کہ ملکی اور قومی مسائل سڑکوں پر حل کرنے کے بجائے مذاکرات کے زریعے حل کئے جائے، جبکہ ہم حکو مت سے مطالبہ کرتے تمام مکاتب فکر کے علماء اور مذہبی رہنما وں سے مشاورت سے کشیدگی کو دور کیا جائے۔آفاق احمد نے کہا کہ جو مسئلہ افہام و تفہیم سے حل کیا جاسکتا تھا اُسے طاقت سے ختم کرنے کے حکومتی فیصلے نے ملک میں افراتفری اور غیر یقینی کی صورتحال سے دوچار کردیا ہے جو نہ صر ف ملک کے نقصان کا سبب بنا بلکہ اسی کی وجہ سے عوام میں شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے۔آفاق احمد نے کہا کہ ختم نبوت اور ناموس رسالت کے تحفظ کیلئے امت مسلمہ کا ہر بچہ کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کرسکتا،عقیدہ ختم نبوت ہر مسلمان کے ایمان کا بنیادی جز ہے،جس میں تبدیلی اور ردوبدل کرنے والا ہر شخص قوم وملک اور اسلام کا دشمن ہے جنکے چہرے بے نقاب کرکے قوم کے سامنے لاکر قرار واقعی سزا دی جائے۔انہوں نے کہاکہ مذہبی رہنما اور عالم دین سمیت دیگر افراد کی گرفتاریاں معاملات کو مزدید بدسے بد کی جانب لیجائیگی،ہم سپریم کورٹ،وزیر اعظم پاکستان ، آرمی چیف سمیت مذہبی رہنما اور علماء کرام سے اپیل کرتے ہیں ،ختم نبوت ترمیمی بل سنگین اور حساس مسئلہ ہے جسے ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کیلئے مشترکہ کانفرنس بلائی جائے اور اسلامی تعلیمات کی روشنی میں میں حل کیا جائے۔

مزید : کراچی صفحہ آخر