”ہم آرمی چیف کو جو بھی کہتے انہوں نے مان لینا تھا کیونکہ۔۔۔“ علامہ خادم حسین رضوی نے ایسا دعویٰ کر دیا کہ خود جنرل قمر جاوید باجوہ بھی حیرت زدہ رہ جائیں گے

”ہم آرمی چیف کو جو بھی کہتے انہوں نے مان لینا تھا کیونکہ۔۔۔“ علامہ خادم حسین ...
”ہم آرمی چیف کو جو بھی کہتے انہوں نے مان لینا تھا کیونکہ۔۔۔“ علامہ خادم حسین رضوی نے ایسا دعویٰ کر دیا کہ خود جنرل قمر جاوید باجوہ بھی حیرت زدہ رہ جائیں گے

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تحریک لبیک کے سربراہ علامہ خادم حسین رضوی کا کہنا ہے کہ وہ اور بھی مطالبات کر سکتے تھے اور اس وقت جنرل قمر جاوید باجوہ سے جو بھی کہتے انہوں نے مان جانا تھا۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔ آرمی چیف نے ثالثی کا کردار ادا نہیں کیا،قمر جاوید باجوہ نے شہبازشریف کی بات کی تائید کی:رانا ثنااللہ 

حکومت سے معاہدے کے بعد دھرنے کے خاتمے کے اعلان کیلئے پریس کانفرنس کرتے ہوئے علامہ خادم حسین رضوی نے کہا کہ ”وفاقی وزیر زاہد حامد کا استعفیٰ ختم نبوت کی وجہ سے ہے، اس وقت ہم اور بھی مطالبات کر سکتے تھے، ہم جنرل قمر جاوید باجوہ کو جو بھی کہتے انہوں نے مان جانا تھا لیکن لوگوں نے کہنا تھا کہ یہ تو حکومت ہٹانے کیلئے آئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔ ”زاہد حامد کا استعفیٰ ہمارے شہداءکے خون کی قیمت نہیں، ہم۔۔۔“ حکومت کیساتھ معاہدے کے بعد خادم حسین رضوی نے تہلکہ خیز اعلان کر دیا 

اس لئے ہم نے اور کوئی بات نہیں کی ہے، انشاءاللہ جتنے بھی مجرمین ہیں جنہوں نے اس جرم میں شراکت کی ہے، ان تمام کو بے نقاب کیا جائے گا اور ان کے خلاف ایف آئی آر بھی درج ہوں گی اور قانون کے مطابق ان کو سزا بھی دلوائی جائے گی۔“

مزید : اسلام آباد