بے گناہ افراد کو ہراساں کرنے والے نیب اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی: جسٹس (ر) جاوید اقبال

بے گناہ افراد کو ہراساں کرنے والے نیب اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی: ...
بے گناہ افراد کو ہراساں کرنے والے نیب اہلکاروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی: جسٹس (ر) جاوید اقبال

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال نے کہا ہے کہانکوائری/انویسٹی گیشن ہونے کے بعد قانون کے برخلاف کھولنے اور کسی بے گناہ کو بار بار نیب میں بلانے اور مبینہ طور پر ہراساں کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

حکومت اور تحریک لبیک میں معاہدہ طے پا گیا، 22 روزہ دھرنا ختم کرنے کا اعلان

تفصیلات کے مطابق قومی احتسا ب بیورو (نیب) کے چیئرمین جسٹس(ر) جاوید اقبال نے کرپٹ اور بدعنوان عناصر کے خلاف گھیرا تنگ کرنے کے ساتھ ساتھ ادارے کے ملازمین کو بھی خبر دار کردیا ہے۔انہوں نے ادارے کے سات بیوروز کو عوام کی مدد کرنے کی ہدایت کی ساتھ ہی واضح کیا کہ قانون کے برخلاف کیس کھلنے یا کسی کو ہراساں کرنے والوں کو بخشا نہیں جائے گا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں کام کرنے والی موبائل فون کمپنیاں مبینہ طور پر رپورٹس کے مطابق حکومت پاکستان کو تقریباً400 ارب روپے کاسالانہ ٹیکس ادا نہیں کرتیں جس کی وجہ سے قومی خزانے میں ہر سال تقریباً 400 ارب روپے جمع نہیں کروایاجارہا بلکہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) کی کارکردگی خصوصاًٹیکس وصولی کے نظام میں مزید بہتری لانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان بیرونی سرمایہ کاری کے لئے بہترین ملک ہے مگر ہمیں اپنے قومی مفادات کے تحفظ کے لئے قانون کے مطابق ٹیکس وصول کرنے کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھانے چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ نیب کے 7علاقائی بیوروز ہیں جن کے انچارج متعلقہ ڈائریکٹر جنرلز ہیں جن کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ عوام کی بد عنوانی سے متعلقہ تمام شکایات کا نہ صرف قانون کے مطابق ازالہ کیا جا رہا ہے بلکہ شکایات کنندگان کو ان کی شکایات کے متعلق بروقت آگاہ کیا جارہاہے۔

مزید : قومی