زرعی یونیورسٹی میں دوروزہ آن کلا ئمیٹ سمارٹ ایگریکلچرکانفرنس

    زرعی یونیورسٹی میں دوروزہ آن کلا ئمیٹ سمارٹ ایگریکلچرکانفرنس

  



ملتان (سٹی رپورٹر)ایم این ایس زرعی یونیورسٹی میں عالمی ادارہ برائے خوارک و زرعت(FAO)کی تکینکی معاونت اورشعبہ ایگرانومی کے زیر اہتمام موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ (بقیہ نمبر52صفحہ12پر)

سے زراعت کو پہنچنے والے متوقع نقصانات کو کم کرنے کے حوالے سے دو روزہ انٹر نیشنل کانفرنس آن کلامیٹ سمارٹ ایگریکلچر کا انعقاد کیا گیا۔انٹر نیشل کانفرنس کے پہلے روز افتتاح ایڈیشنل چیف سیکرٹری ایگریکلچر سمیراصمد، وائس چانسلر جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی، نمائندہ عالمی ادارہ برائے خوارک و زرعت(FAO)مینا دولت چایہی (Mina Dowlatchahi)،چیئر مین پاکستان ایگریکلچر ریسرچ کونسل ڈاکٹر محمد عظیم خان اور سابق آئی جی ریلوے پولیس سید ابن حسین نے کیا۔انٹر نیشنل کانفرنس کے پہلے روز پاکستان کے علاوہ پانچ مختلف ممالک کے 10سائنسدانوں نے شرکت کی۔ علاوازیں پاکستان کی مختلف جامعات، تحقیقی اداروں، شعبہ توسیع زراعت اور ترقی پذیر کسانوں کی بہت بڑی تعداد نے شرکت کی۔ انٹرنیشنل کانفرنس کے افتتاحی روز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایڈیشنل چیف سیکرٹری ایگریکلچر سمیراصمدنے زرعی یونیورسٹی کی جانب سے انٹرنیشنل کلائی میٹ سمارٹ ایگریکچر کے موضوع پرکانفرنس کروانے پرمسرت کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کے شعبہ زراعت کو مختلف قسم کے مسائل کا سامنا ہے جن میں پانی کی کمی اور موسمیاتی تبدیلیوں سے ہونے والے نقصان زیادہ ہیں۔انہوں نے مزید کہاکہ اس طرح کی کانفرنس کے انعقاد سے نہ صرف ہمارے ملک کے سائنسدانوں اور کسانوں کی رہنمائی بہتر انداز سے کی جاسکتی ہے بلکہ زراعت کے بارے میں بہتر پالیسی بنانے میں مدد ملے گی۔ انٹر نیشنل کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی نے کہاکہ جا معہ زرعیہ ملتان کا پہلے دن سے ہی موسمیاتی تبدیلیوں اور اس کے اثرات پر نظر ہے۔ آج کی کانفرنس اسی سلسلے کی کڑی ہے۔ اس دوروزہ کانفرنس میں 70سے زائد مقالہ جات پیش کئے جائیں گے اور انکی روشنی میں پالیسی ساز اداروں، سائنسدانوں اور کسانوں کیلئے ہدایات جاری کی جائیں گی۔

کانفرنس

مزید : ملتان صفحہ آخر