پاکستان قومی زبان تحریک کو از سر نو تشکیل دیا جائے گا،عزیز ظفر آزاد

  پاکستان قومی زبان تحریک کو از سر نو تشکیل دیا جائے گا،عزیز ظفر آزاد

  



لاہور(پ ر)پاکستان قومی زبان تحریک کا ایک تنظیمی اجلاس عزیز ظفرآزاد کی صدارت میں ہوا، جس میں اتفاق رائے سے فیصلہ کیا گیا کہ تحریک کو ازسرنو تشکیل دیا جائے اورموجودہ تمام ذمہ داریاں ختم کر کے نئے سرے سے ہر سطح پر تنظیمی ڈھانچہ استوار کیا جائے۔ اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ اردو کے لیے مختلف تنظیموں سے رابطہ کرکے ایک وفاق قائم کیا جائے تاکہ اس جدوجہد کو پوری قوت اور جانفشانی کے ساتھ آگے بڑھایا جا سکے۔ اجلاس کے دوران اس امر کوتشویش کی نظر سے دیکھا گیا کہ سابق حکومت نے 9 نومبر کویوم اقبال کی تعطیل کا خاتمہ کیا تھا جب کہ موجودہ حکومت نے بھی اس مبارک دن کی اہمیت کو نظر انداز کرتے ہوئے کرتارپور کے پروگرام کو فوقیت دی جب کہ یہی پروگرام 12نومبر کو گرونانک کی پیدائش کے حوالے سے بھی کیا جاسکتا تھا۔ قومی زبان تحریک اس نظریاتی پسپائی کو تشویش کی نظر سے دیکھتے ہوئے حکومتِ وقت سے احتجاج کرتی ہے۔ گزشتہ دنوں ناروے میں حرمتِ قرآن کے حوالے سے مجرمانہ جسارت کو روکنے پر قومی زبان تحریک کا اجلاس عمر الیاس نامی نوجوان کی دینی غیرت و حمیت پر خراج تحسین پیش کرتا ہے۔ اجلاس میں قومی زبان تحریک کے خبرنامے کے اجرا کا فیصلہ بھی کیا گیا۔اجلاس میں سابق اے جی پنجاب محمد جمیل بھٹی، ملک یوسف فاروق ایڈوکیٹ سپریم کورٹ پروفیسر رضوان الحق،فاطمہ قمر، پروفیسر کاشف بن سعید،محمد ابوبکراور معظم علی نے شرکت کی

مزید : میٹروپولیٹن 1