خواتین کیخلاف تشددکاعالمی دن‘ صدارتی سیکرٹریٹ میں خصوصی تقریب

    خواتین کیخلاف تشددکاعالمی دن‘ صدارتی سیکرٹریٹ میں خصوصی تقریب

  



لاہور(پ ر)وفاقی وزارت قانون و انصاف کی جانب سے پاکستان کیلئے یورپی یونین کے وفد کے اشتراک سے خواتین کے خلاف عالمی تشدد کے خاتمے کے عالمی دن کے حوالے سے صدر سیکریٹریٹ اسلام آباد میں ایک خصوصی پروگرام کا انعقاد کیا گیا اور اس موقع پر #TimeForRealHonourکے نام سے ایک مہم بھی متعارف کرائی گئی۔اس تقریب کے مہمان خصوصی صدر پاکستان عزت مآب جناب ڈاکٹر عارف علوی تھے جبکہ اس موقع پر وفاقی وزیر قانون و انصاف بیرسٹر ڈاکٹر محمد فروغ نسیم بھی موجود تھے۔مہم کے ذریعے وفاقی وزارت قانون وانصاف نے پاکستان کیلئے یورپی یونین کے وفد کے اشتراک سے ملک بھر میں غیرت کے نام پر قتل کے خلاف مختلف اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ ایک ڈائیلاگ اور نشست کی کاوش کی اور غیرت کے نام پر قتل کے خلاف قوانین کے نفاذ سے متعلق زیادہ باخبر طریقہ کار سے متعلق وضاحت کی گئی۔ایک اندازے کے مطابق پاکستان میں ہر سال تقریباً 1000خواتین غیرت کے نام پر قتل کردی جاتی ہیں۔یہ غیر قانونی و غیر انسانی رجحان سخت قانون سازی کے نفاذکے باوجود جاری ہے جس میں غیرت کے نام پر قتل کا قانون 2016بھی شامل ہے جس میں عمر قید،غیرت کے نام پر قتل کرنے والے کو 25سال قید کی سزا اور متاثرہ خاندان کی جانب سے غیرت کے نام پر قتل کرنے والے کو معافی دینے پر پابندی شامل ہیں۔ ایونٹ میں ایک پینل مذاکرے کا بھی اہتمام کیا گیا تھا جس کی نظامت پارلیمانی سیکریٹری برائے قانون و انصاف بیرسٹر ملیکہ علی بخاری نے کی جبکہ مذاکرے کے شرکاء میں وزیر خارجہ و نائب صدر پی ٹی آئی شاہ محمود قریشی،وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ ڈاکٹر فہمیدہ مرزا،ایڈیشنل آئی جی پنجاب انعام غنی،ایڈووکیٹ و عاصمہ جہانگیر لیگل ایڈ سیل کی ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ندا علی،وکیل و ڈیجیٹل رائٹس فاؤنڈیشن کی بانی نگہت داد اور شرمین عبید چنائے شامل تھے،جہاں شرکاء نے پاکستان میں غیرت کے نام پر قتل کے خلاف قوانین اور ان قوانین کے مزید نفاذ و اصلاح کے حوالے سے انتظامی کاوشوں پر تبادل خیال کیا۔

مزید : کامرس