گرین اسٹار کے تعاون سے ناصرہ اسکول میں خاندانی منصوبہ بندی پرمباحثہ 

گرین اسٹار کے تعاون سے ناصرہ اسکول میں خاندانی منصوبہ بندی پرمباحثہ 

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)دی ایجوکیشن ٹرسٹ ناصرہ اسکولز   (ETNS) کے زیر اہتمام، مین کیمپس،صدر میں، 23 اور  24نومبر، 2019 ء کو دوروزہ سالانہ ماڈل یونائٹیڈ نیشنز ناصرہ مونMODEL UNITED NATION NASRAMUN)  منعقد ہوا۔ اِس ایونٹ میں انٹیلی جنٹ کونسل کے ارکان اور خصوصی کمیٹیوں نے حصہ لیا اور ایجنڈے میں شامل”آبادی“ کے موضوع پر تفصیلی  تبادلہ خیال کرنے کے ساتھ ایسے مؤثرحل پیش کیے جن کی مدد سے پاکستان میں خاندانوں کے بڑے سائز کی وجہ سے درپیش چیلنجوں اور اُس سے آبادی کے لیے بنیادی سہولتوں کی فراہمی پر ہونے والے اثرات سے نمٹا جا سکے۔ اِس معلوماتی ایونٹ میں تقاریر اور مباحثوں کا انعقاد  گرین اسٹار سوشل مارکیٹنگ (GSM) کے تعاون سے کیا گیا۔ گرین اسٹار سوشل مارکیٹنگ ایک سماجی ادارہ ہے جو سنہ 1991ء سے پاکستان میں خاندانی منصوبہ بندی کے لیے کام کر رہا ہے اور پاپولیشن سروسز انٹرنیشنل کا انڈیپنڈنٹ نیٹ ورک رکن ہے۔اس ایونٹ میں مہمان خصوصی،کراچی میں تعینات،برطانوی ڈپٹی ہائی کمشنر اور ٹریڈ ڈائریکٹر برائے پاکستان، مائیک  نتھاوریاناکس    (Mike Nithavrianakis     ) کے علاوہ گرین اسٹار سوشل مارکیٹنگ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر، ڈاکٹر سید عزیز الرّب، ایجوکیشن ٹرسٹ ناصرہ اسکولز کی ٹرسٹی اور ٹریژرر محترمہ شہناز وزیر علی(ستارہ امتیاز) اور ایجوکیشن ٹرسٹ ناصرہ اسکولز ہی کے منیجنگ ٹرسٹی عامر ایس فینسی نے بھی شرکت کی۔اِن معزز مہمانوں کے علاوہ خود ناصرہ اسکول مین کیمپس، صدر، سے 700 طلباء و طالبات جبکہ کورنگی، ملیر، سپر ہائی وے اور شمالی کراچی میں واقع اسکولوں سے تعلق رکھنے والے 1000 طلباء و طالبات نے شرکت کی۔ا علاوہ ازیں، ناصرہ پبلک اسکول سے تعلق رکھنے والے 20 طلباء و طالبات، فیکلٹی کے ارکان اور مہمانوں کے اور دیگر اسکولوں مثلاً دی ایجوکیٹرز (لکھنو ہاؤسنگ سوسائٹی کیمپس)، بیکن لائٹ اکیڈیمی (معمار کیمپس)، کراچی پبلک اسکول (صفوی کیمپس) اور الفا کالج (شارع فیصل برانچ)کے 120 سے زائد طلباء و طالبات نے شرکت کی۔یہ ایک غیر نصابی سرگرمی تھی جس میں طلباء و طالبات نے اقوام متحدہ اور اس کی مختلف کمیٹیوں کے نمائندوں کا کردار اداکیا۔ وفود کے ارکان نے پاکستان کی ایک خیالی ’قومی اسمبلی (PNA)‘ تشکیل دی تاکہ آبادی بم سے ہونے والے دھماکے، اس کے سماجی و اقتصادی اثرات اور ماحول پر ہونے والے اثرات پر بحث کی جا سکے۔ اس خیالی قومی اسمبلی میں  خاندانوں کے بڑے سائز کی وجہ پاکستان میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی پرمرتب ہونے والے اثرات پر بھی بحث ہوئی اور اسی کے ساتھ پاکستان کے دیگرممالک کے ساتھ تعلقات کا جائزہ لیا گیا۔

مزید : صفحہ آخر /ملتان صفحہ آخر