”گیٹ منی“ میں حصے کا معاملہ، پی سی بی نے سخت فیصلہ سنا دیا

”گیٹ منی“ میں حصے کا معاملہ، پی سی بی نے سخت فیصلہ سنا دیا
”گیٹ منی“ میں حصے کا معاملہ، پی سی بی نے سخت فیصلہ سنا دیا

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل ) فرنچائزز کو ”گیٹ منی“ سے زیادہ حصہ نہیں مل سکے گا اور گورننگ بورڈ نے اس حوالے سے تجویز بھی مسترد کر دی ہے۔

نجی خبر رساں ادارے ”ایکسپریس نیوز“ کے مطابق پی ایس ایل فرنچائزز کو ”گیٹ منی“ کا 60 فیصد اور بورڈ کو 40 فیصد ملتا تھا تاہم چند ماہ قبل پی سی بی نے اس بات پر اتفاق کر لیا تھا کہ ہوم گراو¿نڈز پر ہونے والی لیگ میں ”گیٹ منی “ کا70 فیصد فرنچائزز کو ہی دیا جائے گا جبکہ بورڈ کو 30 فیصد حصہ ملے گا۔ ذرائع نے بتایا کہ گزشتہ دنوں لاہور میں منعقدہ اجلاس کے دوران گورننگ بورڈ نے یہ تجویز مسترد کر دی اور اراکین نے رائے دی کہ ٹیموں کو ملنے والا موجودہ شیئر ہی مناسب ہے۔

ایک رکن نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ پی سی بی نے یہ اقدام متواتر مطالبات کرنے والی فرنچائزز کو سبق سکھانے کیلئے اٹھایا ہے کیونکہ حکام فرنچائزز کے دھمکی آمیز روئیے سے ناخوش تھے جس کے بعد گزشتہ دنوں طے پانے والی دیگر مراعات پر عملدرآمد بھی خطرے میں پڑ گیا ہے۔

واضح رہے کہ آمدنی میں حصہ بڑھانے سمیت کئی معاملات پر بورڈ اور فرنچائزز میں اختلافات ہیں جبکہ اس حوالے سے چند روز قبل خاصی سخت ای میلز کا تبادلہ بھی ہوا جس کے بعد مالکان نے وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کا ارادہ بھی ظاہر کیا تھا تاہم اس پر تاحال عملدرآمد نہیں کیا۔

دوسری جانب ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ کئی فرنچائزز نے بورڈ سے ایڈوانس میں دئیے گئے فیس کے چیک جمع نہ کرانے کی درخواست کرتے ہوئے مزید وقت مانگ لیا ہے، حتیٰ کہ فرنچائزز تاخیر کی وجہ سے لگنے والا جرمانہ بھرنے کو بھی تیار ہیں۔

مزید : کھیل