’ قانون ڈھونڈنے شروع کیے جائیں تو پھر کوئی کھسرا بھی ملک کا صدر بن جائے گا‘ سابق جرنیل کا حیران کن بیان سامنے آگیا

’ قانون ڈھونڈنے شروع کیے جائیں تو پھر کوئی کھسرا بھی ملک کا صدر بن جائے گا‘ ...
’ قانون ڈھونڈنے شروع کیے جائیں تو پھر کوئی کھسرا بھی ملک کا صدر بن جائے گا‘ سابق جرنیل کا حیران کن بیان سامنے آگیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) دفاعی تجزیہ کار میجر جنرل (ر) اعجاز اعوان نے کہاہے کہ اگر قانون اس طرح ڈھونڈنا شروع کئے جائیں تو پھر تو کوئی کھسرا (خواجہ سرا) بھی پاکستان کا صد ر بن سکتاہے، قانون کو پشت پناہی آئین پاکستان کی ہے ،اگر قانون کی تفسیر لکھنی ہے تو پھر پہلے یہ سارانظام بند کردیں۔

اے آروائی نیوز کے پروگرام ”آف دی ریکارڈ“میں گفتگو کرتے ہوئے میجر جنرل (ر) اعجاز اعوان نے کہا کہ اٹارنی جنرل کیا گھاس کھاتے ہیں؟وہ عدالت میں یہ نہیں کہہ سکتے تھے کہ آرمی چیف کو اس طرح توسیع دی جاسکتی ہے کہ وہ حلف اٹھا کر آتاہے ، جنگ لڑتاہے ، قربانیاں دیتاہے ۔

انہوں نے کہا کہ اگر قانون اس طرح ڈھونڈنا شروع کئے جائیں تو پھر تو کوئی کھسرا (خواجہ سرا) بھی پاکستان کا صد ر بن سکتاہے، قانون کو پشت پناہی آئین پاکستان کی ہے ،اگر قانون کی تفسیر لکھنی ہے تو پھر یہ سارانظام پہلے بند کردیں۔انہوں نے کہا کہ آرمی چیف جب اپنی مدت پوری کرلیتاہے تو پھر صدر پاکستان کو یہ اختیار ہے کہ وہ آرمی چیف کو ایکسٹینشن دے سکتاہے ۔انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کن وجوہات کی بنیاد پرکی گئی ہے؟ یہ وجوہات تو وزیر اعظم اور صدر ہی بیان کر سکتے ہیں ۔

مزید : قومی