سندھ اسمبلی مچھلی منڈی بن گئی ، احتجاج کے شور میں ایسا بل منظور ہو گیا کہ پیپلز پارٹی کی مخالف جماعتیں منہ دیکھتی رہ گئیں 

سندھ اسمبلی مچھلی منڈی بن گئی ، احتجاج کے شور میں ایسا بل منظور ہو گیا کہ ...
سندھ اسمبلی مچھلی منڈی بن گئی ، احتجاج کے شور میں ایسا بل منظور ہو گیا کہ پیپلز پارٹی کی مخالف جماعتیں منہ دیکھتی رہ گئیں 
سورس: File Photo

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)اپوزیشن کا احتجاج بھی کسی کام نہ آیا اور سندھ اسمبلی میں بلدیاتی ترمیمی بل کو منظور کرلیا گیا۔

نجی ٹی وی کے مطابق سندھ اسمبلی کے اجلاس میں پیپلز پارٹی کی صوبائی حکومت نے اپوزیشن ارکان کے احتجاج کی آڑ میں سندھ لوکل گورنمنٹ ترمیمی ایکٹ بل منظور کرلیا،اپوزیشن ارکان کی جمع کرائی گئی ترامیم ایوان میں پیش نہیں کیں۔حزب اختلاف کی جانب سے شور شراباکیا گیا جبکہ سپیکر ڈائس کا گھیراؤ کرتے ہوئے شدید نعرے بازی کے بعد ایوان سے واک آؤٹ کیا گیا۔

بعدازاں اپوزیشن جماعتوں کےرہنماؤں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پورے سندھ کے بلدیاتی نظام پر پھر ڈاکہ ڈالنے کی کوشش کی گئی،اسمبلی میں لوکل باڈی کا بل لائے، بل کسی کو دکھایا اوربتایا نہیں گیا۔کنور نوید جمیل نے کہا کہ اس بل کو اسمبلی میں لیکر آتے، اسمبلی کے ارکان کوبات کرنے کا موقع دیتے،آزادی کے ساتھ اس پر بحث کرتے،میئر اور ڈپٹی مئیر کے لئے سیکریٹ ووٹنگ لے آئے ہے تاکہ لوگوں کی خرید و فروخت کی جائے۔انہوں نے کہا کہ مزید اختیارات لے لئے گئے،کراچی مونسپل کارپوریشن( کے ایم سی) کے سکول اور ہسپتال سندھ حکومت کے پاس چلے جائینگے، ہم اس بل کو مسترد کرتے ہیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -