کورونا کی نئی قسم، نیو یارک میں ایمرجنسی نافذ

کورونا کی نئی قسم، نیو یارک میں ایمرجنسی نافذ
کورونا کی نئی قسم، نیو یارک میں ایمرجنسی نافذ
سورس: Facebook

  

نیو یارک (ڈیلی  پاکستان آن لائن) کورونا وائرس کی نئی قسم اومی کرون سامنے آنے کے بعد امریکی ریاست نیو یارک میں ایمرجنسی صورت حال نافذ کردی گئی ہے۔ یہاں یہ بھی واضح رہے کہ نیو یارک سمیت پورے امریکہ میں تاحال اومی کرون کا ایک بھی کیس رپورٹ نہیں ہوا۔

امریکی ٹی وی این بی سی کے مطابق نیو یارک کی گورنر کیتھی ہوچل نے سردیوں کے دوران کورونا کے پھیلاؤ کے خطرے کے پیش نظر ایمرجنسی صورت حال کے نفاذ کا اعلان کردیا ہے جو 3 دسمبر سے عمل میں آئے گی۔ ایمرجنسی کے دوران ریاست کو یہ اختیار حاصل ہوگا کہ وہ وبا سے قابو پانے والی سپلائیز حاصل کرسکے، ہسپتالوں میں گنجائش بڑھا سکے اور سٹاف کی ممکنہ کمی سے بہتر طور پر نمٹ سکے۔ ایمرجنسی کے دوران ریاست کے ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کو یہ اختیار حاصل ہوگا کہ وہ ہسپتالوں میں غیر ضروری اور غیر ہنگامی طبی  عمل کو  روک سکے۔

نیو یارک کی گورنر نے اپنے بیان میں کہا کہ وہ آئندہ سردیوں کے دوران کورونا میں ممکنہ اضافے پر نظر رکھے ہوئے ہیں، ابھی نیو یارک میں کورونا کی نئی قسم اومی کرون کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا لیکن یہ قسم آنے ہی والی ہے۔

خیال رہے کہ جنوبی افریقہ میں کورونا وائرس کی نئی قسم دریافت ہوئی ہے جو پہلی تمام اقسام سے زیادہ تیزی کے ساتھ پھیلتی ہے۔ عالمی ادارہ صحت نے اس نئی قسم کو اومی کرون کا نام دیا ہے جو اب تک جنوبی افریقہ، برطانیہ اور ہانگ کانگ سمیت آٹھ ملکوں میں پھیل چکی ہے۔

 کورونا کی اس قسم کو اب تک کی سب سے خطرناک قسم قرار دیا جا رہا ہے کیونکہ اس میں سنہ 2019 میں چین میں آنے والے اصل کورونا وائرس کے مقابلے میں 50 تبدیلیاں آچکی ہیں جن میں سے 10 تبدیلیاں اس کے پروٹین میں آئی ہیں۔ یہ وہ پروٹین ہے جو وائرس کو انسانی جسم میں داخل کرتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ وائرس اب تک استعمال کی جانے والی ویکسینز کے خلاف بھی مضبوط قوت مدافعت رکھتا ہے۔

مزید :

Breaking News -اہم خبریں -بین الاقوامی -کورونا وائرس -