انسانی خدمت اور  روحانیت

      انسانی خدمت اور  روحانیت
      انسانی خدمت اور  روحانیت

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 قرآن کریم کی زبان میں یہ صرف اللہ تعالیٰ کی ذات ہے جو انسان کو ہدایت بخشتی ہے، وہی جسے چاہتا ہے، سیدھے راستہ پر چلا دیتا ہے،اور جسے چاہتا ہے گمراہ رہنے دیتا ہے، وہی ہمیں ہنساتا ہے اور وہی رلاتا ہے، جب ہم بیمار ہوتے ہیں تو وہی شفا دیتا ہے، وہی غنی کرتا ہے اور وہی مفلس بناتا ہے، وہی ہمیں زندگی دیتا ہے اور وہی موت، اور پھر وہی دوبارہ زندہ کرے گا اور اسی کے ہاتھ میں ساری بخشش اور مغفرت ہے، وہی انسانوں کی پکار سنتا ہے اور وہی توبہ کی توفیق بخشتا ہے اور  وہی معاف فرماتا ہے کہ اس کی رحمت اس کے غضب پر حاوی ہے۔ وہ ذات باری تو رحمت کے بہانے ڈھونڈتی ہے۔اللہ تعالیٰ کے ہاں سب کچھ ہے، مگر ظلم نہیں۔ وہ ہماری خطائیں معاف کرتا ہے ہماری نیکیوں کے بدلے میں بھی اور بے حساب اجر بھی عطا کرتا ہے۔جب اللہ پر یہ ایمان پختہ ہو جائے کہ اس کائنات میں جو کچھ ہے وہ اسی کے قبضہ قدرت میں ہے، اور اسی کا فضل و کرم ہے کہ وہ ہمیں سیدھا راستہ دکھاتا ہے اور بہت سوں کو بھٹکنے کیلئے چھوڑ بھی دیتا ہے، تو پھر انسان کو اپنی کسی خوبی پر نازاں ہونے کی بجائے ہمہ وقت رب کریم کا شکر ادا کرنا چاہئے کہ وہ ہمیں ہدایت بھی دیتا ہے،ایمان کی دولت سے مالا مال بھی کرتا ہے، اپنے نبی ؐ کی لا زوال محبت سے بھی ہمارے دِلوں کو منور کرتا ہے،وہی ہمیں سجدہ کی سعادت سے بہرہ ور کرتا ہے۔ وہی ہماری دعائیں اور التجائیں سنتا ہے۔ بعض اوقات وہ ہماری دعائیں فوری قبول فرماتا ہے، کبھی بہت مانگنے پر بھی عطا نہیں کرتا اور کبھی وہ کچھ بھی عطا کر دیتا ہے اور بے حساب عطا کر دیتا ہے جو ہمارے وہم و گمان میں بھی نہیں ہوتا۔یہ سب اسکا کرم ہے جو مختلف اوقات میں مختلف شکلوں میں ظاہر ہوتا ہے۔کبھی رزق میں کمی بیشی سے، کبھی اختیار و اقتدار کے آنے جانے میں اس میں بڑی نشانیاں ہیں۔اِس کائنات میں اللہ تعالیٰ کو انسان سب سے زیادہ محبوب ہے، جو اس کے بندوں کی خیر خواہی کرتا ہے، اللہ تعالیٰ اس کی خیر خواہی کرتے ہیں۔

 آپ انسانوں سے خدا ترسی کا سلوک کریں، انسانیت کی خدمت کریں، دوسروں کے لئے آسانیاں پیدا کریں آپ اللہ کے پسندیدہ اور برگزیدہ لوگوں میں شمار ہوتے جائیں گے۔اللہ کی مخلوق سے اچھا اور احسن سلوک، کچھ رحم دلی کچھ خدا ترسی آپ کو اللہ کی محبت کی طرف کھنچتی ہے۔ اللہ تعالیٰ آپ کے کاموں میں آسانیاں پیدا کر دیتا ہے۔ مخلوق خدا کو تنگ کر کے،زچ کرکے، ظلم اور زیادتی کرکے بندہ خدا کے غضب کو دعوت دیتا ہے۔ کمزور اور مجبور کی غلطیوں پر چشم پوشی اور احسان اس صدقہ سے بہتر ہے جس کے بعد اس کی دل آزاری کی جائے۔برصغیر ہندو پاک میں ہمارے بہت سے اولیا کرامؒ نے اپنی اعلیٰ اخلاقی اقدار اور انسانی خدمت کی بدولت اسلام پھیلایا۔ ان کے ہاں لنگر کی تقسیم میں یہ نہیں دیکھا گیا کہ کھانے والا ہندو ہے یا مسلمان،بلکہ پہلے کھانا کھلایا پھر تبلیغ کی، بلکہ کھانا اور لنگر کی تقسیم میں سیکولر رویہ اپنایا۔نہ اپنے پرائے کی تقسیم،نہ مسلمان کافر کی تمیز، جو بھی آیا اسے پیٹ بھر کر کھانا کھلایا۔ روحانیت میں کرامات بھی ہوتی ہیں، مگر روحانیت صرف کرامات کا نام نہیں،بلکہ یہ کردار و اخلاق کی پختگی، اللہ تعالیٰ سے گہرا قلبی و روحانی واسطہ، ذکر الٰہی، عشق محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم، انسانوں سے محبت اور انسانی خدمت میں مضمر ہے، انسانی خدمت، انسانوں سے پیار اور شفقت اور خدا ترسی روحانیت کے وہ زینے ہیں کہ جن سے گزرے بغیر بات نہیں بنتی۔ روحانیت میں سجدوں میں خدا کی قربت ملتی ہے اور انسانی خدمت میں خدا ملتا ہے۔اللہ تعالیٰ ہمیں اخلاص نیت کے ساتھ انسانی خدمت کی توفیق عطا فرمائے۔

مزید :

رائے -کالم -