امن مذاکرات کا ٹھوس اور موثر نتیجہ نہ نکلا تو بات چیت کا عمل روک دینگے،زیپی لیونی

امن مذاکرات کا ٹھوس اور موثر نتیجہ نہ نکلا تو بات چیت کا عمل روک دینگے،زیپی ...

مقبوضہ بیت المقدس (این این آئی) اسرائیلی وزیر قانون و انصاف اور فلسطینی اتھارٹی سے مذاکراتی ٹیم کی نگران زیپی لیونی نے کہا ہے کہ مشرق وسطیٰ امن مذاکرات میں معمولی نوعیت کی پیش رفت ہوئی ہے تاہم کوئی بڑا بریک تھرو نہیں ہو سکا ہے، اگر مذاکرات کا کوئی ٹھوس اور موثر نتیجہ سامنے نہ آیا تو وہ بات چیت کاعمل روک دینگے۔اپنے ایک بیان میں مسز لیونی نے کہا کہ امن مذاکرات اپنے حساس ترین دور سے گزر رہے ہیں یہی وجہ ہے کہ ان میں کوئی بڑی پیش رفت نہیں ہوسکی۔انہوں نے کہا کہ مذاکرات کے پچھلے ادوار میں معمولی پیش رفت ہوئی ہے۔ ہم صورتحال کا باریک بینی سے جائزہ لے رہے ہیں۔ اگر ہم اس نتیجے تک پہنچے کہ مذاکرات کا کوئی ٹھوس نتیجہ برآمد نہیں ہو رہا ہے تو ہم بات چیت کا عمل روک دیں گے۔

مسز لیونی نے کہا کہ حکومت پوری توجہ کے ساتھ مذاکرات عمل کو مانیٹر کر رہی ہے۔ فلسطینی اتھارٹی کے ساتھ ہونے والے مذاکرات کے بعض ادوار سہولت اور آسانی کے ساتھ جاری رہے لیکن بعض سیشن پیچیدگی اور بدمزگی کا شکار رہے ہیں۔

، جن میں کوئی پیش رفت نہیں ہو سکی ہے۔انہوں نے کہا کہ آخری دنوں میں مذاکرات کےلئے ایک ہفتے میں چار چار بار ملاقاتیں ہوتی رہی ہیں۔ ان مذاکرات میں تمام جوہری معاملات پر بات کرنے کےساتھ ساتھ رکاوٹوں کو دور کرنے پر غور کیا جاتا رہا ہے۔

مزید : عالمی منظر