ٹوبہ ٹیک سنگھ میں بچی سے بداخلاقی، تین دن کے اندر رپورٹ طلب

ٹوبہ ٹیک سنگھ میں بچی سے بداخلاقی، تین دن کے اندر رپورٹ طلب

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے دس سالہ معصوم بچی سے بداخلاقی کے واقعہ کے حوالے سے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ٹوبہ ٹیک سنگھ کوحکم دیا ہے کہ پولیس کی جانب سے فوجداری ضابطہ کی دفعہ173 کے تحت رپورٹ ٹرائل کورٹ میںتین دن کے اندرپیش کئے جانے کو یقینی بنائے تاکہ وقوعہ کی شفاف کارروائی عمل میں لائی جاسکے۔تفصیلات کے مطابق نواحی گاﺅں چک 345/GB کے رہائشی صدیق مغل نے پولیس کو بتا یا کہ اسکی دس سالہ بیٹی قریبی گاﺅں میں قرآن پاک پڑھنے جا رہی تھی، راستے میں دو نامعلوم ملزمان نے بچی کو اغواءکر کے ایک ویران مقام پر لے گئے جہاں انہوں نے اسے بد اخلاقی نشانہ بنایا اور بچی کے بے ہوش ہونے پر اسے جانوروں کے گوبر میں دبا دیا اور فرار ہو گئے۔ جب بچی کو ہوش آیا تو اس نے چیخ و پکار کی جس پر بچی کو دیہی مرکز صحت چک منتقل کیا گیا۔عدالت عالیہ کے کمپلینٹ سیل نے مذکورہ واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ سیشن جج سے رپورٹ طلب کی جس پر سیشن جج نے کہا ہے کہ تھانہ صدر گوجرہ پولیس نے ملزم سرفراز احمد اور اسکے نامعلوم ساتھی کے خلاف مذکورہ واقعہ کا مقدمہ درج کرتے ہوئے ملزم سرفراز کو گرفتار کر لیا جو کہ جسمانی ریمانڈ پر ہے جبکہ دوسرے ملزم کی گرفتاری کےلئے کوشش کی جار ہی ہے۔ متاثرہ بچی کا طبی معائنہ کروایا گیا ہے اور مطلوبہ نمونے کیمیکل ایگزامینشن کےلئے کیمیکل لیبارٹری لاہور بھیجے دیئے گئے ہیں۔ تاہم تفتیشی افسر کو ہدایت کی گئی ہے کہ جلد از جلد دوسرے ملزم کو گرفتار کر کے تفتیش مکمل کی جائے اور ملزمان کے خلاف پولیس رپورٹ مرتب کرکے متعلقہ عدالت میں پیش کی جائے۔کمپلینٹ سیل نے متعلقہ سیشن جج کو ہدایت کی ہے کہ مذکورہ بالا احکامات کی من وعن عمل کرتے ہوئے تین دن میں زیر دفعہ173 ضابطہ فوجداری پولیس رپورٹ پیش کی جائے تاکہ انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں۔

مزید : صفحہ آخر