بھارتی جنتا پارٹی کے حکومت سنبھالتے ہی بھارتی جنگی جنون میں تیزی آگئی

بھارتی جنتا پارٹی کے حکومت سنبھالتے ہی بھارتی جنگی جنون میں تیزی آگئی

  

نئی دہلی(این این آئی) ہندو قوم پرست جماعت بھارتی جنتا پارٹی کے حکومت سنبھالتے ہی بھارتی جنگی جنون میں تیزی آگئی ہے اور اسی سلسلے میں بھارت نے امریکی میزائل شکن دفاعی سسٹم کو مسترد کرتے ہوئے اسرائیلی دفاعی نظام خریدنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق بھارتی وزارت دفاع کے ذرائع نے بتایا کہ بھارتی حکومت نے امریکہ کی جانب سے اینٹی ٹینک میزائل سسٹم ’جیولائن‘ کو خریدنے کی پیشکش کی تھی تاہم بھارتی حکومت نے اسے مسترد کرتے ہوئے اسرائیلی میزائل شکن دفاعی نظام ’اسپائیک‘ خریدنے کا فیصلہ کیا ذرائع کے مطابق بھارتی ڈیفنس ایکوزیشن کونسل کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ اسرائیل سے معاہدے کے تحت کم از کم 8 ہزار اسپائک میزائل اور 300 لاو¿نچرز خریدے جائیں گے جن کی کل مالیت 5 کروڑ 25 لاکھ ڈالر یا 32 ارب روپے ہوگی۔اسرائیلی ساختہ یہ دفاعی نظام اسپائک ایک ایسا میزائل شکن دفاعی نظام ہے جو دشمن کی جانب سے فائر کئے گئے میزائل کو ٹارگٹ ہٹ کرنے سے قبل ہی مار گراتا ہے اسے اسرائیلی رافیل ایڈوانس ڈیفنس سسٹم نے تیار کیا گیا جو امریکی دفاعی نظام جیولائن سے بہتر ہے۔ رپورٹ کے مطابق بھارتی وزیر دفاع ارون جیٹلی نے پروکیورمنٹ پینل کو ہدایت جاری کی کہ معاہدے کے راستے میں تمام رکاوٹوں کو فوری طور پر دور کیا جائے کیونکہ نیشنل سیکورٹی بھارتی حکومت کا مرکزی نقطہ ہے۔امریکی سیکرٹر ی دفاع چیک ہیگل نے بھارتی وزیر اعظم کے امریکی دورے کےدوران انہیں ’جیولائن‘ کی خریداری کی پیشکش کی تھی-

 سے بھارت کی جانب سے مسترد کردیا گیا ہے تاہم امریکی دفاعی حکام کا کہنا ہے کہ وہ اب بھی بھارت سے اس نظام کو خریدنے کےلئے بات چیت کر رہے ہیں کیونکہ یہ امریکہ اور بھارت کے درمیان گہرے دفاعی تعلقات کا حصہ ہے۔دوسری جانب بھارتی حکومت نے 13 ارب ڈالر کے دفاعی منصوبوں کی بھی منظوری دے دی ہے جس کے ذریعے بھارتی دفاع کو جدید بنایا جائےگا ¾ان منصوبوں میں مقامی دفاعی انڈسٹریز کو بھی جدید بنانا شامل ہے۔واضح رہے کہ بی جے پی کی حکومت کو ابھی قائم ہوئے پانچ ماہ ہوئے ہیں لیکن بھارتی وزیر اعظم نریندرا مودی چاہتے ہیں کہ بھارت کی دفاعی اخراجات کے راستے میں تمام رکاوٹوں کو دور کیا جائے تاکہ بھارتی دفاع کو مضبوط کیا جاسکے۔

مزید :

عالمی منظر -