اومان کا آئندہ سال مختلف مصنوعات پر دی جانے والی سبسڈی میں کمی کرنے کا فیصلہ

اومان کا آئندہ سال مختلف مصنوعات پر دی جانے والی سبسڈی میں کمی کرنے کا فیصلہ

  

مسقط (اے پی پی) اومان نے عالمی سطح پر خام تیل کی گرتی ہوئی قیمتوں سے مالیاتی امور پر دباﺅ کے باعث آئندہ سال مختلف مصنوعات پر دی جانے والی سبسڈی میں کمی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق عالمی سطح پر خام تیل کی اوسطً 85 ڈالر فی بیرل قیمتوں سے اومان کو آئندہ مالی سال کے دوران بجٹ خسارے کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جس پر قابو پانے کےلئے حکومت اخراجات میں کمی اور مختلف مصنوعات پر دی جانے والی سبسڈی کو کم کرنے پر غور کر رہی ہے۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق اومان کے وزیر خزانہ درویش البلوشی نے اپنے بیان میں کہا کہ مختلف مصنوعات پر غیر ضروری سبسڈی ختم کرنے کےلئے بہترین وقت ہے اور لوگ اس بات کی اہمیت کو بخوبی سمجھ سکتے ہیں۔

 انہوں نے کہا کہ تیل قدرت کی طرف سے عطا کیا جانے والا ایک خزانہ ہے جسے غیر ضروری طور پر زیادہ استعمال کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سبسڈی کا موجودہ نظام غیر موثر ہے کیونکہ اس میں غریب افراد پر توجہ نہیں دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ سبسڈی کے نظام سے مستحق اور غیر مستحق تمام افراد مستفید ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سبسڈی اصلاحات آہستہ آہستہ کی جائیں گی اور ان میں اس بات کا خیال رکھا جائے گا کہ اس سے مستحق افراد متاثر نہ ہوں تاہم انہوں نے اس بارے میں مزید تفصیلات سے آگاہ نہیں کیا۔

مزید :

کامرس -