ایبولا وائرس کے نام پر نیا فراڈ شروع

ایبولا وائرس کے نام پر نیا فراڈ شروع
ایبولا وائرس کے نام پر نیا فراڈ شروع

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک)مجرمانہ ذہنیت کی پستی کی بھی کوئی حد نہیں اور ان بدکردار لوگوں کو اس بات سے قطعاً کوئی غرض نہیں ہوتی کہ وہ کسی المیے کو اپے گھناو¿نے مقاصد کیلئے استعمال کر رہے ہیں۔

کچھ ایسا ہی واقعہ حال ہی میں پھیلنے والے ایبولا کمپیوٹر وائرس کی صورت میں نظر آتا ہے۔تباہ کن اور دہشت ناک ایبولا وائرس اب تک ہزاروں کی دردناک موت کا باعث بن چکا ہے لیکن کمپیوٹر وائرس پھیلانے والے مجرموں نے اس کے متعلق معلومات فراہم کرنے والی ای میل کی آڑ میں کمپیوٹر کاخوفناک وائرس پھیلانا شروع کر دیا ہے۔

بظاہر یہ ای میل ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی طرف سے بھیجی گئی نظر آتی ہے اور اس کا موضوع ایبولا کے متعلق معلومات اور بچاو¿ کے طریقے بتایا جاتا ہے لیکن اسے کھولنے والے کمپیوٹر میں ایسا وائرس گھس جاتا ہے جو اینٹی وائرس پروگرام سے بھی پکڑا نہیں جاتا اور خاموشی سے تصویریں ، ویڈیوز، فائلیں اور دیگر ڈیٹا چرا لیتا ہے۔

اسے دریافت کرنے والی کمپنیSpider Labsکا کہنا ہے کہ اس سے بچنے کیلئے ایبولا وائرس کی معلومات دینے والی نامعلوم ای میل کو ہرگز نہ کھولیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -