دھان کی کٹائی اور پھنڈائی میں احتیاط برتنے سے پیداوار میں 10فیصد اضافہ ممکن ہے، محکمہ زراعت

دھان کی کٹائی اور پھنڈائی میں احتیاط برتنے سے پیداوار میں 10فیصد اضافہ ممکن ...

لاہور(اے پی پی ) دھان کی کٹائی اور پھنڈائی میں احتیاط برتنے سے پیداوار میں 10فیصد اضافہ کیاجاسکتاہے ۔محکمہ زراعت پنجاب کے ترجمان کے مطابق کٹائی کے بعد جلد پھنڈائی کر لی جائے تو چھڑائی میں ثابت چاول زیادہ اور ٹوٹا کم حاصل ہوتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ فصل کی کٹائی سے 2 ہفتے قبل کھیت سے پانی نکال دیا جائے اور کھیت کو خشک ہونے دیا جائے تاکہ فصل کاٹنے میں آسانی رہے۔کٹائی کے وقت کھیت میں پانی کی موجودگی سے فصل گر سکتی ہے جس سے سٹے پانی میں خراب ہو سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ فصل کے مڈھوں میں ہل چلا کر سنڈیوں کو تلف نہ کیا جائے تو یہ سنڈیاں آنے والی فصل کے لئے زیادہ نقصان کا باعث بنتی ہیں۔ ماہرین کے مطابق کمبائن ہارویسٹر کے ذریعے دھان کی کٹائی سے پیداوار کو کافی حد تک ضائع ہونے سے بچایا جا سکتا ہے۔انہوں نے کہاکہ کٹائی کے بعد اس کی جلد از جلد پھنڈائی مکمل کر لی جائے۔

کیونکہ دن گرم اورراتیں ٹھنڈی ہوتی ہیں اور کافی مقدار میں اوس یعنی شبنم بھی پڑتی ہے جس سے کھیت میں پڑی ہوئی فصل رات کو اوس سے بھیگ جاتی ہے اور دن کی دھوپ میں سوکھ جاتی ہے، اس طرح متواتر، تر اور خشک ہونے سے دانوں میں چوڑی پڑ جاتی ہے اور چھڑائی متاثر ہوتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جب چاولوں کو دانت کے نیچے چبانے سے تڑک کی آواز پیدا ہویا چاولوں میں نمی 13 تا 14 فیصد رہ جائے تو یہ چاول ذخیرہ کرنے کے قابل ہو جاتے ہیں،پیداوارسٹور کرنے سے پہلے گوداموں کے نقصان دہ کیڑوں کے موثر انسداد کے لئے مخصوص زہروں کا استعمال کیا جائے۔

مزید : کامرس