تعلیم کی نجکاری کسی بھی صورت قابل قبول نہیں ہے، صہیب الدین کاکا خیل

تعلیم کی نجکاری کسی بھی صورت قابل قبول نہیں ہے، صہیب الدین کاکا خیل

لاہور(خبرنگار) اسلامی جمعیت طلبہ پاکستان کے ناظم اعلیٰ صہیب الدین کاکا خیل نے کہا ہے کہ تعلیم کی نجکاری کے ذریعے غریبوں پر تعلیم کے دروازے بند کئے جارہے ہیں جو کسی بھی صورت میں قابل قبول نہیں۔ حکومت نے اگر شعبہ تعلیم میں اصلاحات نہ کیں تو اسمبلی کا گھیراؤ کریں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب اسمبلی کے سامنے حقوق طلبہ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ ریلی سے رہنما جماعت اسلامی حافظ سلمان بٹ، ناظم اسلامی جمعیت طلبہ جامعہ پنجاب نثار احمد، ناظم اسلامی جمعیت طلبہ جامعہ پنجاب احمد فرقان اور ناظم لاہور جمعیت جبران بن سلمان نے بھی خطاب کیا۔

ناظم اعلیٰ جمعیت نے مزید کہا کہ یکساں نظام تعلیم اور طلبہ یونین کی بحالی کے کھوکھلے دعوؤں سے طلبہ مرعوب نہیں ہوں گے۔یہ جھوٹے دعوؤں کے نقلی لولی پاپ طلبہ کے غصے کو مزید روکنے میں ناکام ہوں گے۔ حکومت تعلیمی بجٹ میں اضافہ کرے، اردو کو ذریعہ تعلیم بنائے، سرکاری تعلیمی اداروں میں طلبہ سے بھاری فیسیں لینے کا عمل روکتے ہوئے مفت تعلیم کو یقینی بنائے۔کرپشن کے بھوت نے جہاں تمام سرکاری محکموں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے وہیں محکمہ تعلیم کوبھی اس عفریت سے خطرہ ہے۔اسلامی جمعیت طلبہ ، طلبہ حقوق کی جد وجہد کو جاری رکھے گی۔اس موقع پر رہنما جماعت اسلامی حافظ سلمان بٹ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ طلبہ یونین موروثی، جاگیردارانہ اور آمرانہ سیاست کے لئے خطرہ ہے، حکمران طلبہ کو مزید نہیں دبا سکتے۔ایوب خان کے تاریک دور کا خاتمہ بھی طلبہ یونین کی جدوجہد کی بدولت ممکن ہوا ہے ۔ موجود ہ حکمران بھی یونین کی بحالی اس خوف سے نہیں کر رہے کیوں کہ ان کے اقتدار اور سیاست کو اس سے خطرہ ہے۔ناظم جمعیت پنجاب جنوبی نثار احمد نے پنجاب حکومت کی پالیسیوں کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور عالمی مالیاتی اداروں کے دباؤ میں آکر سرکاری تعلیمی اداروں کی نجکاری کے اقدامات کو حکومت کی ناکامی قرار دیا۔احمد فرقان ناظم جمعیت پنجاب یونیورسٹی نے سرکاری جامعات میں بڑھتی ہوئی فیسوں ، ہاسٹلز کی کمی اور یونیورسٹی بسوں کی عدم دستیابی پرحکومت کی خاموشی کو ایک سوالیہ نشان قرار دیا۔ سرکاری جامعات میں پارکنگ فیسوں کی مد میں بھاری رقوم اینٹھ کر بھی گاڑیوں اور موٹر سائیکلز کی چوریوں پر گہری تفشیش کا اظہار کیا۔انہوں نے مزید کہا کہ ایشیاء کی سب سے بڑی یونیورسٹی میں اقربا پروری عروج پر ہے۔ طلبہ وطالبات کا جان و مال محفوط نہیں ہے، جب کہ مجاہد کامران اپنے ذرائع استعمال کرتے ہوئے اپنے اقتدار کو طوالت دینے میں مصروف ہیں۔ اس موقع پر ناظم اسلامی جمعیت طلبہ لاہور جبران بن سلمان نے کہا کہ میٹرو بس اور اورنج ٹرین پر اربوں خرچ کئے جا رہے ہیں مگر تعلیم کو کمرشل بنیادوں پر چلایا جا رہا ہے۔ کرپٹ اور چور عناصر تعلیمی اداروں میں مسلط کرکے حکومتی سطح پر ان کی سرپرستی کی جارہی ہے۔سرکاری کالجز کی بسیں سٹاف کے فیملی ٹوورز کے لئے تو موجود ہیں مگر طلبہ وطالبات کے لئے یہ سہولت دستیاب نہیں۔ریلی کے شرکاء نے مطالبات کے حق میں کتبے اٹھا رکھے تھے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 4