مریضوں پر تشدد، وائی ڈی اے رہنماؤں کی پی جی ٹریننگ معطل، میو ہسپتال سے نکال دیا گیا

مریضوں پر تشدد، وائی ڈی اے رہنماؤں کی پی جی ٹریننگ معطل، میو ہسپتال سے نکال ...

لا ہور (جنر ل ر پو رٹر )محکمہ صحت نے ہسپتا لو ں میں مر یضوں ان کے لو احقین کو تشد د کا نشانہ بنانے والے اور ہلا گلا کر نے والے ینگ ڈا کٹرز ایسویشن کے ر ہنماؤں کے خلا ف کارروا ئی کا آغاز کردیا ہے ۔ابتدا میو ہسپتا ل سے کی گئی ہے تحقیقاتی کمیٹی کے کنوینر سپیشل سیکرٹر ی صحت ڈا کٹر ساجدچوھان ، وی سی یو ایس ایچ جنر ل (ر) محمدا سلم اور پروفیسر داکٹر عیسص محمد کی ر پو رٹ پرایکشن لیا گیا ہے ۔ جس کے تحت وائی ڈ ی ائے میو ہسپتا ل کے چیئرمین ڈاکٹر شہریار نیازی جنر ل سیکر ٹر ی ڈا کٹر مظہر ر فیق کی پی جی ٹریننگ معطل کردی گئی ہے اور انہیں میوہسپتا ل سے نکا ل د یا ہے ۔ ان کی پی جی ٹریننگ ایک سال تک معطل ر ہے گی اور آئند ہ کے لئے ان کی میو ہسپتا ل میں تر بیت پر پا بند ی عا ئد کردی گئی ہے ۔ بتا یا گیا ہے کہ میو ہسپتال میں مریض اور اس کے رشتے داروں پر ڈاکٹرز کا تشدد ثابت ہوگیا۔ محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر نے وائے ڈی اے کے ڈاکٹرز، ایک نرس اور دیگر سٹاف کیخلاف کارروائی کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا۔تفصیلا ت کے مطا بق ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر صدف دستگیر کا تبادلہ کردیا گیا۔نرس لبنیٰ ثمر کا لاہور جنرل ہسپتال جب کہ ڈیٹا آپریٹر افتخار احمد کو میو ہسپتال سے شاہدرہ ہسپتال تبدیل کردیا گیا ہے اور پروفیسر ڈاکٹراصغرنقی کواس حوالے سے وارننگ جاری کی گئی ہے۔اسی طرح میو ہسپتال کے پولیس چوکی انچارج اے ایس آئی ریاض احمد کیخلاف کارروائی کیلئے ڈی آئی جی آپریشنز لاہور کو لکھ دیا ہے۔ انکوائری میں ڈاکٹرز کی جانب سے مریض پر تشدد ثابت ہونے کے بعد محکمہ ہیلتھ نے احکامات جاری کیے ہیں۔واضح رہے کہ چند روز قبل میو ہسپتال میں ایک مریض اور اس کے رشتے داروں پر تشدد کا واقعہ پیش آیا تھا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1