عمران خان نے 1983کے فلیٹ کے ٹیکس ریٹرن داخل نہیں کئے،آزاد تبسم

عمران خان نے 1983کے فلیٹ کے ٹیکس ریٹرن داخل نہیں کئے،آزاد تبسم

لاہور(جنرل رپورٹر) مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی آزاد علی تبسم نے کہا ہے کہ عمران خان نے 1983ء میں ایک فلیٹ 20 ہزار پاؤنڈ کا خریدا تھا، انہوں نے ان کے ٹیکس ریٹرن داخل نہیں کئے۔

، 1981ء میں عمران خان نے 30 لاکھ اور 1983ء میں 35 لاکھ سے کم کمایا تھا اور ان میں سے اخراجات بھی کئے لیکن یہ ساری رقم 20 ہزار پاؤنڈ نہیں بنتی۔ انہوں نے یہاں پر منی لانڈرنگ کی تھی وہ رسیدیں دکھا دیں کیونکہ 1983ء میں نیازی لمیٹڈ سروس کے نام پر آف شور کمپنی بنائی وہ 2015ء تک رکھی لیکن اس کا ٹیکس میں کبھی بھی ذکر نہیں کیا، 33 سال تک انہیں چھپا کر فراڈ کیا، 2003ء میں جو فلیٹ بیچ دیا تھا اس کی کوئی تفصیلات نہیں بتائیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان مشرف کے فین تھے ،انہوں نے ان کے دور حکومت میں کالے دھن کو سفید کرنے کیلئے سکیم نکالی ، اس سکیم کے تحت عمران خان نے کالے دھن کو سفید کر لیا ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے ساڑھے تین کروڑ کا گھر بنایا، اتنی بڑی رقم وہ ساری زندگی میں بھی نہیں کما سکتے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1