لاہور،اکبری گیٹ میں دستی کبم پھٹنے سے 4گھر زمین بوس ،1شخص جاں بحق ،13زخمی

لاہور،اکبری گیٹ میں دستی کبم پھٹنے سے 4گھر زمین بوس ،1شخص جاں بحق ،13زخمی

لا ہور (اپنے کر ا ئم ر پو ر ٹر سے )اکبر ی گیٹ میں دستی بم پھٹنے سے 4 مکانوں کی چھتیں گر گئیں۔ حادثے میں 1شخص جاں بحق جبکہ 13زخمی ہوگئے۔ امدا د ی ٹیمو ں نے موقع پر پہنچ کر کا رروا ئی کرتے ہو ئے ملبے تلے د بے زخمی افرا د کو نکا ل کر طبی امدا د کے لئے میو ہسپتا ل منتقل کردیا جبکہ جا ں بحق ہو نے والے شخص کی لاش کو مردہ خا نہ منتقل کر دیا ،ر یسکیو اہلکاروں کا کہنا تھا کہ زخمی ہونے والوں میں بچے، خواتین اور مرد بھی شامل ہیں۔ر یسکیو اہلکا رو ں کا کہنا تھا کہ علاقے کی گلیاں تنگ ہونے کے باعث امدادی کاموں میں دشواری کا سامنا ر ہا۔ پو لیس کا کہنا ہے کہ مکا ن کے ملبے سے بم اور دستی بم کے خول ملے ہیں جس پر پو لیس قانو ن نا فذ کر نے والے اداروں نے تفتیش شروع کردی ہے ۔وزیر اعلی ٰ پنجا ب شہباز شریف نے واقعہ کا نو ٹس لیتے ہو ئے انکو ائری کا حکم د ے دیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق ا کبر ی گیٹ میں زور دار دھماکہ ہوا جس کے باعث ایک دوسرے سے متصل چار مکانوں کی چھتیں گر گئیں۔ حادثے کی اطلاع ملنے پر ریسکیو ٹیمیں جائے حادثہ پر پہنچ گئیں اور ملبے تلے دبے3 1 افراد50سالہ تجمل حسین ، 40سالہ فدا حسین ، سلمان ، شہباز ، زاہد ، 38سالہ ارم بی بی ، 55سالہ نسیم اختر ، آمنہ ، علی ، ہارون، سلمان علی ، مریم شہباز، علی افصل ، اقراء ، ر یحا نہ وغیر ہ کو نکال کر طبی امداد کیلئے میو ہسپتال منتقل کردیا جہاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے علی افصل جا ن کی با زی ہا ر گیا۔زخمی ہونے والوں میں بچے، خواتین اور مرد بھی شامل ہیں ۔ر یسکیو اہلکا رو ں کا کہنا تھا کہ علاقے کی گلیاں تنگ ہونے کے باعث امدادی کاموں میں دشواری کا سامنا ر ہا ۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور قانو ن نافذ کر نے والے ادروں کی بھاری نفری اور بم ڈسپوزل کا عملہ بھی موقع پر پہنچ گیا بعد میں معلوم ہوا کہ 15 ایمرجنسی پر کال ظفر علی نامی محلہ دار نے اپنے موبائل سے چلوائی ۔ ظفر علی کا کہنا تھا اس نے خود پہلے دھماکے کی آواز سنی پھر سفید دھواں اٹھتا دیکھا دھماکہ چھت گرنے سے پہلے ہوا اور اس میں بارود کی بو بھی تھی جبکہ بم ڈسپوزل اسکواڈ کا عملہ بھی بم دھماکے کی اطلاع پر وہاں پہنچ گیا بم ڈسپوزل اہلکار اللہ یار کا کہنا تھا کہ جو گرنیڈ وہاں سے ملا وہ صرف خول ہے اس میں مٹی بھری ہوئی تھی اس گرنیڈ سے ایسے کوئی شواہد نہیں ملتے کہ وہ تازہ چلایا گیا ہے ہو سکتا ہے کہ محلہ دار نے پولیس کو گرنیڈ پکڑتے دیکھا اور اسے بم دھماکہ بنا دیا۔ قانو ن نا فذ کر نے والے اداروں نے موقع پر پہنچ کر کا رروا ئی کاآ غاز کردیا ہے ۔

مزید : صفحہ اول