دہشتگردی کیخلاف وکلاء کی ہائیکورٹ اور ماتحت عدالتوں میں ہڑتال

دہشتگردی کیخلاف وکلاء کی ہائیکورٹ اور ماتحت عدالتوں میں ہڑتال

لاہور(نامہ نگار خصوصی /نامہ نگار)کوئٹہ میں پولیس ٹریننگ سینٹر پر دہشت گردحملے کیخلاف پاکستان اور پنجاب بار کونسل کی اپیل پر لاہور ہائیکورٹ اور ماتحت عدالتوں میں ہڑتال کی گئی ۔ وکلاء نے عدالتوں کا بائیکاٹ کیا، جبکہ لاہور ہائیکورٹ بار کے اجلاس میں دہشت گردی کیخلاف مذمتی قرار داد بھی منظور کر لی گئی۔ پاکستان بار اور پنجاب بار کونسل نے کوئٹہ میں پولیس ٹریننگ سنٹر پر دہشت گردوں کے حملے کیخلاف ملک بھر میں ہڑتال کی کال دی تھی ۔جس پر لاہور ہائیکورٹ سمیت ماتحت عدالتوں میں وکلاء پیش نہیں ہوئے، عدالتوں میں صرف اہم نوعیت کے فوری نوعیت کے مقدمات کی سماعت کی جبکہ ریگولر اور دیگر فہرست کے مقدمات میں اگلی تاریخیں ڈال دی گئیں،۔ وکلا تنظیموں کی عمارتوں پر سیاہ پرچم لہرائے گئے اور بار ایسوسی ایشنز میں مذمتی اجلاس ہوئے ۔ وکلاء نے بازووں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا۔ پاکستان بار کونسل کے وائس چیئر مین ڈاکٹر فروغ نسیم نے سانحہ کوئٹہ میں شہید ہونے والوں کے لواحقین سے اظہار تعزیت اور زخمی ہونے والوں کے ساتھ اظہار ہمدردی کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت دہشت گردی کے ناسور کے خاتمے کیلئے ٹھوس اقدامات کرے۔ سانحہ کوٹہ کے حوالے سے لاہور بار کے صدر جہانگیر اے جھوجہ سمیت دیگر عہدیدران کا کہنا ہے کہ ہمارا ابھی پہلا زخم نہیں بھرا تھا کہ کوٹہ کا واقع پیش آگیا ہم ناقص سیکورٹی کی وجہ سے کب تک لاشیں اٹھاتے رہی گے حکومت کو اس اہم مسئلے کے سلسلہ میں خصوصی اقدامات کرنے ہوں گے۔

عدالتوں میں ہڑتال

مزید : صفحہ آخر