امریکہ انسداد دہشت گردی کیلئے چین سے زیادہ گہرے تعاون کا خواہاں

امریکہ انسداد دہشت گردی کیلئے چین سے زیادہ گہرے تعاون کا خواہاں

واشنگٹن (اظہر زمان، بیوروچیف) امریکہ اور چین کے وفود نے دہشت گردی سے نمٹنے اور خطے کی سکیورٹی کے لئے مشترکہ حکمت عملی تیار کرنے کے ایجنڈے پر غور کیا۔ ایک سال کے وقفے کے بعد ہونے والے ان اہم مذاکرات میں امریکی وفود نے مہمانوں کو بتایا کہ امریکہ انسداد دہشت گردی کے لئے چین سے زیادہ گہرے تعاون کا خواہاں ہے۔ امریکی وفد کی قیادت انسداد دہشت گردی کی قائم مقام کوآرڈینیٹر جسٹن لبریل نے کی، جس میں وزارت خارجہ، وزارت انصاف اور ہوم لینڈ سکیورٹی کے نمائندے شامل تھے۔ چین کے مختلف اداروں کے نمائندہ وفد کی قیادت نائب وزیر خارجہ بی ہولائی کر رہے تھے۔ وزارت خارجہ کے ذرائع نے بتایا کہ دونوں ممالک سکیورٹی کے مختلف شعبوں میں ایک مشترکہ حکمت عملی اختیار کرنے کے ایجنڈے پر غور کر رہے ہیں۔ خطے میں دھماکہ خیز مواد کے استعمال سے دہشت گرد جو ’’آئی ای ڈی‘‘ بم تیار کرتے ہیں۔ اس کی روک تھام کرنے پر بھی بات چیت ہوئی۔ دوسرے اہم موضوعات میں دہشت گردوں کے علاقائی خطرات، بحری سلامتی، معلومات کا تبادلہ، سرحدوں کی سکیورٹی، انسان حقوق کا تحفظ اور پرتشدد انتہا پسندی کے سدباب کی کوششیں شامل تھیں۔ جنوبی ایشیاء کے خطے میں انسداد دہشت گردی کے لئے پاکستان اور بھارت سے الگ الگ مذاکرات کے بعد امریکہ نے ان کے ساتھ سمجھوتے کر رکھے ہیں۔ چین کے وفود کو تفصیلات سے بھی آگاہ کیا گیا۔

مزید : صفحہ آخر