تحصیل کونسل الپوری کا اجلاس،3قرار دادیں متفقہ پر منظور

تحصیل کونسل الپوری کا اجلاس،3قرار دادیں متفقہ پر منظور

الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر)تحصیل کونسل الپوری کا اجلاس ،فلڈ فنڈ کو مقامی بلدیات نمائندوں کے نشاندہی پر خرچ کرنے سمیت تین قرارداد متفقہ طور پر منظور کرادئے گئے۔فلڈ فنڈمیں متاثرین کی گھروں کی دوبارہ آبادکاری کرانے ۔یو سی ملک خیل میں دو نئے تعمیر ہونے والے پلوں پر نظر ثانی کرانے۔فلڈ فنڈ برابر تقسیم کرنے۔شوکت یوسف زئی کو فلڈفنڈ ذاتی کوششوں سے منظور کرانے پر خراج تحسین کے قرارداد شامل۔تفصیلات کے مطابق الپوری تحصیل کونسل کا اجلاس بدھ کے روز سپیکر شوکت علی کے زیر صدارت منعقد ہوا ۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے نون لیگ کے رکن محمد جاوید نے کہا کہ فلڈ فنڈ متاثرہ علاقوں کی آبادکاری کیلئے ہے ،جو یہاں کے بلدیاتی کونسلر کی نشادہی پر استعمال کریں۔فلڈ فنڈ پشاور سے منتخب نمائندہ کی اے ڈی پی نہیں ہے، جو وزیر اعلیٰ کے ذریعے ڈپٹی کمشنر کو ہدایت دے رہے ہیں،اپریل میں ہونے والے سیلاب میں شانگلہ سے دندئی تک کے واٹر سپلائی۔لنک روڈ۔پل متاثر ہوئے تھے۔نون لیگ کے رکن محمد عارف نے کہا کہ انتہائی مایوسی کا مقام ہے کہ سات ماہ گزرنے کے باوجود کروڑہ میں سلائڈ سے زمین بوس ہونے والے مکانات کی تعمیر نہ ہوسکی،آج بھی متاثرین در بدر ٹھوکرے کھا رہے ہیں،متاثرین انتہائی غریب ہیں اور اب تک اپنا گھر تعمیر نہ کرسکیں،حکومت فلڈ فنڈ میں متاثرین کو مالی معاوضہ ادا کریں،کروڑہ میں واٹر سپلائی سکیم مکمل طور پر ختم ہو چکے ہیں ۔پی ٹی ائی کے رکن گل روخان اور اعجاز احمد کمال نے کہا کہ سیلاب کے بعد شوکت یوسف زئی کی کوششوں سے 53کروڑ روپے ریلیز ہوئی،اب کچھ سیاسی لوگ شوکت یوسف زئی کے کوششوں کو نذرانداز کر رہے ہیں،سیلاب ایمرجنسی میں لگائے گئے 12کروڑ روپے کا شفاف تحقیقات کرکے کونسل کو اگاہ کیا جائے،وزیر اعظم کے اعلان کردہ بیس کروڑ روپے کدھر گئی تا حال کوئی اتا پتہ نہیں صرف اعنانات سے نہیں ہوتا وضاحت کی جائے ۔جمیعت علماء کے رکن طیب خان نے کہا کہ سیلاب میں سب سے زیادہ تحصیل الپوری متاثر ہوئی ،کروڑہ سے پیرخانہ اور اولندر تک کوئی انتظار گا ہ نہیں بنوائی گئی جو مایوس کن ہے فوری طور پر انتظارگاہ پر کام شروع کیا جائے۔پی پی کے رکن عجب خان نے کہا کہ ان کے یونین کونسل میں بازار کوٹ،امنی پل کو خوڑ کے درمیان تعمیر کیا جارہاہے ،اگر پانی کا بہاؤ تیز ہوا تو پل کو پانی بہا کر لے جائے گا، پل سائڈ پر تعمیر کیا جائے ۔پی پی کے رکن بصیر خان نے کہا کہ سیلاب میں پیر خانہ سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے،اکثر نلکس روڈ مکمل طور پر خراب ہے ،لودر روڈ سرے سے پانی بہا کر لے گیاہے۔ پی ٹی ائی کے محی الدین نے کہا کہ میرے یوسی میں سڑکوں کی مکمل صفائی کیلئے فنڈ یا جائے ،سیلاب میں 8لاکھ روپے سے کہی کلو میٹرسڑک صاف کیا ہے ،واٹر سپلائی خراب ہو چکی ہے ،لوگ پینے کی صاف پانی سے محروم ہیں۔کیو ڈبلیو پی کے رکن حسن علی نے کہا کہ کانا ویلی سیلاب سے بری طرح متاثر ہوئی ،لوگ ہم سے پوچھتے ہیں اپ لوگ اسمبلیوں میں کس لئے بھیٹے،فلڈ فنڈ کو شفاف اور برابر تقسیم کیا جائے۔اجلاس کے اخر میں کونسل کے سپیکر شوکت علی نے رولنگ دیتے ہوئے کہا کہ شوکت یوسف زئی کے پارٹی سے نہیں ہے تاہم ان کو فنڈ فراہمی پر خراج تحسین پیش کرتے ہیں،متاثرہ سڑکو کی بحالی کیلئے ٹینڈر ہوئے ہیں جلد کام شروع ہوگا ،شوکت یوسف زئی نے شانگلہ کی نمائندہ وفد کی اسرار پر وزیراعلیٰ کو ٹینڈر کیسل کرنے سے روک دیا تھا جو خوش ائند اقدام ہے،سیلاب سے چکیسر میں شدید نقصان ہوا ،وہاں کے حالات بھی جوں کے توں ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر