چارسدہ میں موٹر وہیکل ایگزامینز کا دفتر عوام کیلئے درد سر

چارسدہ میں موٹر وہیکل ایگزامینز کا دفتر عوام کیلئے درد سر

اچارسدہ(بیورورپورٹ) موٹرویکل ایگزامینر کا دفتر عوام کیلئے درد سر بن گیا ۔بھاری گاڑیوں کے ڈرائیونگ لائسنس حاصل کرنے کیلئے درخواست گزار کو گاڑی کا بندوبست خود کرنے کی ہدایات ۔ غریب درخواست گزار چند منٹ کے ٹسٹ کے لئے ہزاروں روپے دیکر گاڑی کا بندوبست کر تے ہیں۔محکمہ کے ضلعی آفسر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر نے گاڑیوں کی بندوبست کو محکمہ موٹر اینڈ ویکل کی ذمہ داری قرار دی ۔ تفصیلات کے مطابق چارسدہ میں موٹر اینڈ ویکل ڈیپارٹمنٹ سے ہیوی ٹرانسپورٹ ویکل لائسنس کا حصول عوام کے لئے جوئے شیر لانے کے مترادف بن گیا ہے ۔لائسنس کے حصول کے لئے اگر ایک طرف درخواست گزار سے ٹسٹ اور دیگر سرکاری امور کے لئے ہزاروں روپے فیس جمع کی جاتی ہے تودوسرے جانب لائسنس کے حصول کے لئے درخواست گزار سے ٹسٹ لینے کے لئے گاڑی کا انتظام خود سے کرنے کی ہدایت کی جاتی ہے ۔ جس کے باعث درخواست گزار چند منٹ کے ڈرائیونگ ٹسٹ کے لئے ہزاروں روپے دیکر گاڑی کا بندو بست کر تا ہے ۔اس حوالے سے موٹر اینڈ ویکل ڈیپارٹمنٹ میں لائسنس کے حصول کے لئے درخواست جمع کرنے والے اختر منیر اور دیگرکا کہنا ہے کہ انہوں نے چھ ماہ قبل HTVؒ ٓلائسنس کے حصول کے لئے درخواست جمع کئے تھے ۔چھ ماہ تک انتظار کے بعد محکمہ کی جانب سے لائسنس کے اجراء سے قبل ٹسٹ کے لئے بڑے گاڑی کا انتظام کرنے کا کہا گیا ۔ غریب درخواست گزاروں کے مطابق انہوں نے ٹسٹ کے لئے سرکاری فیس جمع کی ہے لیکن اب ٹسٹ کے لئے بڑے گاڑی کا بندوبست کرنا مشکل ہے ۔ اس حوالے سے محکمہ موٹر اینڈ ویکل ڈیپارٹمنٹ کے ضلعی افسر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر اعجاز الرحمان کے مطابق لائسنس کے حصول میں ٹسٹ کے دوران گاڑی کا بندو بست محکمہ کی ذمہ داری بنتی ہیں لیکن چارسدہ میں محکمہ موٹر اینڈ ویکل کے آفس میں گاڑیاں نہ ہونے کے باعث تمام درخواست گزار وں کو لائسنس کے حصول کے لئے ہر قسم کی گاڑی کا بند وبست خود کرنا پڑتا ہے ۔یادر ہے کہ خیبر پختون خوا کے دوسر ے اضلاع کی طرح چارسدہ میں بھی ہر قسم کی گاڑیوں کے ڈرائیونگ لائسنس تقریباً آ ٹھ ماہ پہلے محکمہ پولیس جاری کرتے تھے لیکن صوبائی حکومت کے فیصلے کے بعد اب محکمہ پولیس کی جانب سے موٹر کار جبکہ ڈرائیونگ کے دیگر تمام لائسنس ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جاری کرتے ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر