تحصیل کونسل چارسدہ کا اجلاس، ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کی حالت زار قابل رحم

تحصیل کونسل چارسدہ کا اجلاس، ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کی حالت زار قابل رحم

چارسدہ (بیورورپورٹ) تحصیل کونسل چارسدہ کا اجلاس ۔ تحریک انصاف کی خاتون تحصیل ممبرافسر بانو نامعلوم چوروں کے ہاتھوں لٹ گئی ۔خاتون ممبر دس ہزار روپے نقدی اور ضروری کاغذات سے محروم۔ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چارسدہ کی خالت زار پر ممبران پھٹ پڑے ۔ بنیادی مراکز صحت میں چھ مہینے سے ادویات کے فقدان ، نکاس آب کے خراب سسٹم اورصفائی کی ابتر صورتحال کے حوالے سے اراکین کی تنقید ۔تفصیلات کے مطابق تحصیل کونسل کا اجلاس زیر صدارت سپیکر ڈاکٹر الطاف خان منعقد ہوا۔ اجلاس میں تحصیل ناطم خلیل بشیر خان عمرزئی ، اپوزیشن لیڈر خیر محمد اور دیگر ممبران نے شرکت کی ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے تحریک انصاف کی خاتون رکن افسر بانو نے کہا کہ گزشتہ روز وہ ہسپتال جا رہی تھی کہ سٹی تھانہ چارسدہ کے حدود تحصیل بازار میں نامعلوم چوروں نے اُن کو دس ہزار روپے اور ضروری کاغذات سے محروم کردیا ۔ اُنہوں نے امن وامان کی صورتحال بہتر بنانے کا مطالبہ کیا ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے دیگر ممبران عبدالصمد باچا ، احمد علی ، خیر محمد اور دیگر نے یکے بعد دیگرے خطاب کرتے ہوئے دسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چارسدہ کی حالت زار پر شدید تنقید کی اور کہا کہ ایمرجنسی یونٹ میں ڈاکٹر ڈیوٹی نہیں کرتے۔ مریضوں کے ساتھ ڈاکٹر وں کا رویہ جانوروں سے بدتر ہوتا ہے ۔ رات کے اوقات میں ٹیکنیشن ڈاکٹروں کی جگہ ڈیوٹی دیتے ہیں۔ قاضی خیل قبرستان میں آمدورفت اور قبرستان کی بے حرمتی پر بھی شدید تنقید کی گئی اور فوری طور پر قبرستان کو محفوظ کرنے کا مطالبہ کیا گیا ۔ بنیادی مراکز صحت میں گزشتہ چھ ماہ سے ادویات کی عدم دستیابی نوشہرہ و مردان رو ڈ پر نکاس آب کے خراب سسٹم اور صفائی کی ابتر صورتحال پر بھی تنقید کی گئی ۔ اراکین نے مردان روڈ پر مسمار کئے گئے پلوں کی فوری تعمیر ، ترناب بازار اور سرڈھیری گل آباد نہر کے کنارے غیر قانونی تجاوزات کو فور ی طور پر مسمار کرنے کا مطالبہ کیا گیا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر