اٹلی زلزلے سے لرز اٹھا، درجنوں زخمی، تاریخی گرجا گھر اور عمارتیں منہدم

اٹلی زلزلے سے لرز اٹھا، درجنوں زخمی، تاریخی گرجا گھر اور عمارتیں منہدم
اٹلی زلزلے سے لرز اٹھا، درجنوں زخمی، تاریخی گرجا گھر اور عمارتیں منہدم

  

روم(مانیٹرنگ ڈیسک) مختلف شدت کے زلزلے کے جھٹکوں نے اٹلی کے وسطی علاقوں کو ہلا کررکھ دیا، میڈیا رپورٹس کے مطابق زلزلے کے باعث درجنوں افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں جبکہ عمارتوں اور تاریخی گرجا گھروں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق یکے بعد دیگرے آنے والے زلزلے کی شدت 5.4،6.1اور4.8ریکارڈ کی گئی۔ زلزلے کے باعث کئی عمارتیں اور پرانے گرجا گھر منہدم ہوگئے، امبریا ریجن میں واقع پندرھویں صدی کا تاریخی گرجا گھر بھی زلزلے کے باعث تباہ ہوگیا۔رپورٹس کے مطابق یہ ریجن اگست میں آنے والے زلزلے میں سب سے زیادہ متاثر ہوا تھا۔

مقامی وقت کے مطابق شام سات بج کر دس منٹ پر آنے والے زلزلے کے بعد اکثر علاقوں کو بجلی کی فراہمی منقطع ہوگئی، عمارتیں منہدم ہونے کے باعث ہر طرف گرد و غبار کے بادل بھی دکھائی دیئے۔

مکانات گرنے سے بے گھر ہونے والے افراد نے رات بھی کھلے آسمان تلے گزاری جبکہ بار بار کے جھٹکو ں کے خوفزدہ لوگ بھی زیادہ تر گھروں سے باہر ہی رہے۔ زلزلے کے متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں، حکام نے ہلاکتوں کا خدشہ بھی ظاہر کیا ہے۔

اطالوی وزیراعظم نے اپنے ٹویٹر پیغام میں مشکل وقت میں ساتھ دینے والوں کا شکریہ بھی ادا کیا ہے۔ متاثرہ علاقوں میں جمعرات کو سکول کالجز بند رکھنے کا اعلان کیا گیا ہے۔اٹلی میں گذشتہ 24 اگست کو بھی جنوبی علاقے میں زلزلہ آیا تھا جس میں 298 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ اس میں بھی پہاڑی علاقوں میں بہت سی عمارتیں تباہ ہوگئی تھیں۔اے ایف پی کے مطابق اٹلی کے نیشنل جیوفزکس کے ادارے کے ایک افسر ماریو توزی نے کہا ہے کہ 'زلزلے کے بعد آنے والے جھٹکے کافی دیر تک، کئی بار مہینوں تک جاری رہ سکتے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں