ملک کوآمریت سے نجات دلانی ہوگی،حکومت کا طرز عمل قابل مذمت اور افسوس ناک ہے:طاہر القادری

ملک کوآمریت سے نجات دلانی ہوگی،حکومت کا طرز عمل قابل مذمت اور افسوس ناک ...
 ملک کوآمریت سے نجات دلانی ہوگی،حکومت کا طرز عمل قابل مذمت اور افسوس ناک ہے:طاہر القادری

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ طاہر القادری نے کہا ہے کہ اس ملک کو آمریت سے نجات دلانی ہوگی،کارکنان کو ہراساں کرنا حکومت کا حربہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے طاہر القادری کا کہنا تھا کہ اس ملک میں آمریت چل رہی ہے،اگر حکومت بھوکلاہٹ کا شکار نہیں ہے تو ہال کے اندر ہونے والے کنونشن پر لاٹھی چارج کا کوئی جواز نہیں تھا۔حکومت کو چاہیے کہ وہ بادشاہت کا اعلان کردیں ،اگر کنونشن میں کوئی پتھراو اور توڑ پھوڑ نہیں کر رہا تو ان پر لاٹھی چارج کاکوئی جواز نہیں بنتا تھا۔حکومت کا طرز عمل قابل مذمت اور افسوس ناک ہے، اس وقت ملک کے ادارے خاموش کیوں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میری پوری حمایت پی ٹی آئی کے ساتھ ہے، ہم نے کل سی ای سی کا اجلاس بلایا ہے جس میں پی ٹی آئی کے وفد سے ملاقات کے بعددھرنے میں شرکت کرنے یا نہ کرنے کا اعلان کروں گا۔ان کا کہنا تھا کہ ہم نے اس ملک میں بدترین آمریت دیکھی ہے،ماڈل ٹاون میں لوگوں کو سیدھی گولیاں مار کر شہید کیا گیااور جو بچ گئے وہ ابھی تک زیر علاج ہیں۔اگر حکومت ماڈل ٹاونسانحہ دوبارہ دوہرانا چاہتی ہے تو یہ ان کی غلطی فہمی ہے، اگرکارکنان پر تشدد دہرایا گیا تو ہم بھی ان کے ساتھ ہیں۔آج حکمرانوں کے چہرے سے پردہ چاک ہو چکا ہے،حکمران انسانیت کی تزلیل کر رہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ قوم اب حکمرانوں کو نہیں چھوڑے گی اور ایک ایک ظلم کا حساب لے گی۔

مزید : قومی