حکومت کاغذ کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹس لے: پیاف

حکومت کاغذ کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹس لے: پیاف

لاہور(کامرس رپورٹر)پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) نے حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ کا غذ کی قمیتوں میں ہو شربا اضافے کا نوٹس لیا جائے اور کاغذکی قیمت میں کمی کے لئے فوری کردار ادا کیا جائے۔ کاغذ پر 5% ریگولیٹری ڈیوٹی لگنے سے کاغذ مہنگا ہو یا ہے ڈیوٹی کو ختم کیا جائے۔

گزشتہ چند دنوں میں لوکل پبپر ملز نے من مانی کرتے ہوئے کاغذ کی قمیتوں میں 20 سے 25 روپے بلا جواز اضافہ کر دیا ہے جس سے پبلشرز اور کاپی مینو فیکچرز میں شدید بے چینی اور تشویش پائی جاتی ہے۔ لوکل پیپر ملز چار دن کام کرتی ہیں اور تین دن کام بند رکھتے ہیں تاکہ مارکیٹ میں قلت پیدا کی جاسکے۔انکی اجارہ داری ختم کروائی جائے۔ان خیالات کا اظہار چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیرنے سیئنر وائس چیئرمین ناصر حمید اور وائس چیئرمین جاوید صدیقی کے ہمراہ پیپر انڈسٹری سے وابستہ تاجر راہنما خامس سعید بٹ کی قیادت میں آئے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

وفد میں ایسو سی ایشن کے چئیرمین احد امین ملک، صدر خواجہ الیاس ، سیکرٹری حسن رضا، باؤ محمد بشیر محمد اجمل و دیگر شامل تھے۔ چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر نے کہا کہ کاغذ کی قیمتوں کا تعلیمی شعبے سے بڑاگہراتعلق ہے اسکی قمیت میں اضافے سے نہ صرف اس تجارت سے وابستہ تاجر بلکہ عام آدمی بھی براہ راست متاثر ہوتا ہے اب عام آدمی کے لئے اپنے بچوں کو تعلیم دلوانا مشکل ہوتا جارہاہے لہذا حکومت کو اس معا ملے کا فوری نوٹس لینا اور کا غذ کی قمیتں کم کرانے کے لئے کردار ادا کرے۔ لوکل پیر ملوں پر چیک اینڈ بیلنس ہونا چاہیئے ۔کاغذ کی مہنگائی غریب سے تعلیمی حق چھیننے کے مترادف ہے کا غذ کی اس حکومت کے تعلیمی ترقی و پھیلاؤ کے عزائم کو بھی شدید دھچکا لگے گا اگر لوکل پیپرز مل نے ناجائز اضافہ واپس نہ لیا تو ہم حکومت سے اپیل کرتے ہیں وہ کتاب و کاپی کے لئے مطلوبہ سائز کا امپورٹڈ کاغذ ڈیوٹی فری کریں تاکہ لوکل پیپر ز ملز کارٹل بنا کر جو لوٹ مار کر رہی ہے اسے نبٹاجا سکے ۔پیاف کے عہدیدارن نے کہا کہ تاجروں کے مسائل حل کیے بغیر مستحکم معاشی تر قی ہر گزممکن نہیں لہذا حکومت اسے اپنی تر جیحات میں شامل کرے اور کاغذ کی قیمتوں میں اضافے کا فوری نوٹس لے۔

عبد ا لصبور شیخ (سیکر ٹری پیاف)

مزید : کامرس