پاک پتن ، کمسن بچہ بد اخلاقی کے بعد قتل لاش کلیانہ سکول برآمد ، چوکیدار سمیت 2پرائمری ٹیچر گرفتار

پاک پتن ، کمسن بچہ بد اخلاقی کے بعد قتل لاش کلیانہ سکول برآمد ، چوکیدار سمیت ...

پاک پتن(تنویر ساحر سے) پاک پتن کلیانہ سکول سے کمسن بچے کی لاش برآمدگی کے بعد ہولناک انکشاف کہ پاک پتن کے کسی پرائمری اور مڈل سکول میں کوئی چوکیدار ہی تعینات نہیں ہے ضلع بھر میں سینکڑوں سکول چوکیدار کے بغیر ہیں پاک پتن سے سب سے بڑی زیادتی یہ کی گئی کہ 17 سالوں میں محکمہ ایجوکیشن میں درجہ چہارم کے ملازمین بھرتی ہی نہیں کیے گئے سوائے ان چند کے جو فوت شدگان کی جگہ سرکاری پالیسی پر تعینات ہوئے سینکڑوں سکولوں میں چوکیدار نہ ہونے کے باعث سرکاری سامان چوری کے واقعات بھی معمول کا حصہ ہیں۔بد اخلاقی کے بعد بے دردی سے قتل ہونے والے پہلی کلاس کے بچے کی نماز جنازہ کلیانہ میں پڑھائی گئی پولیس افسران بھی نماز جنازہ میں شریک ہوئے جبکہ پولیس نے کلیانہ ہائی سکول کے چوکیدار سمیت دو پرائمری ٹیچرز کو حراست میں لے رکھا ہے چوبیس گھنٹے کے دوران وقوعہ میں ملوث ملزمان سامنے آنے کی توقع ہے سکول کی چابی سکول ٹیچرز کے پاس تھی وقوعہ کے بعد ان ٹیچرز سے چابی لیکر سکول کا گیٹ کھولا گیا تھا۔ درندگی کا شکار ہونے والا بچہ غلام مصطفی اس سکول کا طالب علم نہیں تھا بچے کی لاش سکول کے صحن سے دریافت ہوئی جسے ساتھ والے گھر کی چھت سے دیکھا گیا تھا۔ پولیس نے کلیانہ واقعہ کے بعد سکول کو تالا لگا دیا،گزشتہ روزمتعلقہ سکول میں بچوں کی کلاسیں نہ لگ سکیں سکول کا ہائی حصہ وہاں سے ایک کلومیٹر دور ہے۔ پولیس دو ٹیچرز سمیت محکمہ ایجوکیشن کے تین لوگوں کو حراست میں تو لے چکی ہے لیکن شاید وہ اصل قاتل کی تلاش میں ابھی تک تفتیش کے مراحل میں ہے کیونکہ بند سکول کے اندر بچے کی لاش کا پہنچنا بھی اپنی جگہ ایک معمہ بن چکا ہے۔

مزید : صفحہ آخر